41

مغربی روٹ، چترال تا چکدرہ شاہراہ اور سوات موٹر وے کو سی پیک کا حصہ بنا دیا گیا۔مظفر سید ایڈوکیٹ

پشاور(نمائندہ ڈیلی چترال)خیبرپختونخوا کے وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ نے صوبے بھر کے پختونوں کو خوشخبری دی ہے کہ انڈس ہائی وے سمیت جنوبی اضلاع سے گزرنے والے مغربی روٹ، چترال تا چکدرہ شاہراہ اور سوات موٹر وے کو پاک چین اقتصادی راہداری کا حصہ بنا دیا گیا ہے جس کا وزیراعلیٰ پرویز خٹک کے دورہ چین اور جے سی سی بیجنگ اجلاس سے قبل سی پیک کے نقشے میں وجود ہی نہیں تھا اور ہمیں صرف وعدوں پر ٹرخایا جاتا رہا مگر اب اسکی گارنٹی باقاعدہ چینی حکومت نے دیدی ہے اور نہ صرف انہیں سی پیک روٹ تسلیم کیا گیا بلکہ ان تمام شاہراہوں کی کشادگی اور بین الاقوامی معیار کے مطابق تعمیر کی منظوری بھی مل چکی ہے کرک اور دیر پائیں کے دورے کے دوران شوریٰ اجلاس، یوتھ ونگ کی استقبالیہ تقریب، ورکرز کنونشن اور مختلف مقامات پر عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سی پیک سے متعلق ہماری کوششیں رنگ لے آئی ہیں جس کا سہرا ہماری اتحادی حکومت کے ساتھ ساتھ صوبے کی جملہ سیاسی جماعتوں اور انکے قائدین کو بھی جاتا ہے جنکی یکجہتی کی بدولت ہم نے اپنے چھینے حقوق حاصل کئے اور مستقبل میں یہی طرزعمل اپنا کر ہم خیبر پختونخوا کے عوام کو درپیش مزید گھمبیر مسائل بھی حل کر سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ شاہراہوں کے علاوہ ہمارے صوبے اور فاٹا کو بھی ریلوے لائن، فائیبر آپٹک اور صنعتی و تجارتی زونز کے جال سے منسلک کیا جا رہا ہے جو مستقبل قریب میں اس خطے سے غربت اور پسماندگی کے اندھیرے مٹا کر معاشی خوشحالی کا پیش خیمہ ثابت ہوگا مظفر سید ایڈوکیٹ نے یوتھ ونگ کے انتخابات میں جیتنے والے عہدیداروں کو مبارکباد دیتے ہوئے واضح کیا کہ اگلے مرحلے میں جماعت اور حکومت کی باگ ڈور بھی انکے ہاتھ میں ہو گی ہم ٹیم ورک کے ساتھ شبانہ روز جدوجہد کرکے قوم کو مسائل و مشکلات کی منجدھار سے نکال باہر کرنے میں ضرور کامیاب ہونگے اور کرپشن فری فلاحی ریاست کے قیام کا خواب شرمندہ تعبیر بناکر ہی دم لیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں