43

مسلم لیگ سے پی ٹی آئی میں کون کون شامل ہو رہا ہے ؟ عمران خان کا بڑا دعوی، سیاسی ایوانوں میں ہلچل مچ گئی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے دعویٰ کیا ہے کہ مسلم لیگ کے کئی رہنما تحریک انصاف میں آنے کے لیے ہم سے خفیہ رابطے کررہے ہیں (ن)لیگ چاہتی ہے نواز شریف کو کوئی ہاتھ نہ لگائے ٗ نیب کرپشن چھپانے کے لیے بہانے بنا رہی ہے ٗایف بی آر کا چیئر مین بھی کرپٹ ہے ٗ غیر ملکی کرکٹر پاکستان میں آئےتو فائنل اچھا ہو گا ٗ مکمل پی ایس ایل پاکستان میں ہونا چاہئے تھا۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہاکہ پاناما کیس پر آج پھر عدالتی اختیار پر سوال اٹھایا گیا،(ن) لیگ والے جب ہارنے لگتے ہیں یہ ڈنڈے اٹھالیتے ہیں تاہم ان سے کہنا چاہوں گا کہ اب وقت بدل چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اربوں روپے کی چوری میں ملوث شخص کو بچایا جارہا ہے، ن لیگ چاہتی ہے نواز شریف کو کوئی ہاتھ نہ لگائے، وزراء حکومتی تنخواہ پر شریف فیملی کی نوکری کر رہے ہیں اور نیب کرپشن چھپانے کے لیے بہانے بنا رہی ہے ٗ آج ثابت ہوگیا کہ ایف بی آر کا چیئرمین بھی کرپٹ ہے۔ مسلم لیگ کے کئی رہنما تحریک انصاف میں آنے کے لیے ہم سے خفیہ رابطے کررہے ہیں۔عمران خان نے کہاکہ اسحاق ڈار نواز شریف کے لئے منی لانڈرنگ کرتے تھے، اداروں پر ان لوگوں نے قبضہ کر رکھا ہے، قوم کے پاس انصاف کے لیے سپریم کورٹ ہی بچی ہے اگر ادارے کام کرتے تو یہ کیس سپریم کورٹ میں نہیں آتا،نواز شریف کے وکیل طوطا مینا کی کہانیاںسناتے ہیں تاہم موٹو گینگ کے پاس اب کہنے کے لیے کچھ نہیں ٗپاکستان سپر لیگ کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ اگر غیر ملکی کرکٹر پاکستان میں آئے تو فائنل اچھا ہو گاتاہم مکمل پی ایس ایل پاکستان میں ہونا چاہئے تھا۔ عمران خان نے فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کرنے کا مطالبہ کیا۔چیئرمین پی ٹی آئی نے چارسدہ دھماکوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حملے میں انسانی جانوں کے ضیاع پر بہت افسوس ہوا، چارسدہ میں دھماکا ناکام بنانے پر پولیس کی تعریف کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں پولیس کی کارکردگی پر مجھے فخر ہے ٗخیبرپختونخوا میں پولیس کی کارکردگی پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں، سندھ اورپنجاب میں بھی پولیس غیرسیاسی ہونی چاہئے ٗ سندھ اور پنجاب میں بھی کے پی کی طرح پولیس ایکٹ نافذ کریں جب کہ پنجاب میں رینجرز کو لانا مجبوری ہے۔پاناما لیکس کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال پہ انہوں نے کہا کہ ان کے چار وکیلوں کی بات سے لگتا ہے وزیراعظم قانون سے بالاتر ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں