72

سکولوں میں اساتذہ کی کمی پورے کرنے کے لیے 35 ہزار اساتذہ بھرتی کیے اور مذید بھرتی جاری ہے/سی ایم

پشاور/وزیر اعلی خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ پانامہ لیکس سکینڈل میں ملوث سیاست دان خود اپنی سیاسی موت مرچکے ہیں۔مستقبل تحریک انصاف کاہے۔ پاکستان مذید کرپشن کامتحمل نہیں ہوسکتا۔ اس ملک کوایماندار قیادت کی ضرورت ہے۔ جو پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی صورت میں ہی ممکن ہے آئندہ مرکز سمیت چاروں صوبوں میں پی ٹی آئی کی حکومتیں قائم ہوں گی۔ تاکہ غریب عوام حقیقی معنوں میں بااختیار ہوں۔2018 کے انتخابات میں پی ٹی آئی پورے ملک میں کلین سویپ کرے گی۔تحریک انصاف کے قائد عمران خان کے وژن کے مطابق اس ملک کا سرمایہ غریب عوام کے بنیادی مسائل کے حل پر خرچ ہوگا۔ا ے این پی، پی پی پی اور مسلم لیگ ن کی سیاست کادور ختم ہوچکا ہے ۔ شکست ان کا مقدر بن چکی ہے۔اورعوام ان کا اصل چہرہ جان چکے ہیں۔ان سیاسی پارٹیوں نے اپنے دور اقتدار میں کرپشن، لوٹ کھسوٹ ،اقرابا پروری، بد عنوانی، رشوت، تقرریوں اور تبادلوں کی قیمتیں وصول کرنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔اور صرف اور صرف اپنی تجوریاں بھرتے رہے اور ذاتی مفادات کی سیاست کرتے رہے۔اب پھر نئے لبادے میں عوام کو دھوکہ دینے کے لیے میدان میں اترآئے ہیں۔پی ٹی آئی اپنے منشور پرعمل پیرا ہے۔ اور حکومت کے وسائل غریب عوام پر خرچ کر رہی ہے۔وہ اضاخیل بالا، اور ڈاگئی جدید میں شمولیتی جلسوں سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر اضاخیل میں اے این پی کے کسان کونسلر بیدار محمد، یاسین خان، طاہر گل ، نوید اللہ ، علی خان اور ڈاگئی میں واجد خان سجاد خان نعیم اللہ عبدالدیان خان اور طاوس خان نے اپنے درجنوں ساتھیوں اور خاندان سمیت اے این پی اور مختلف سیاسی جماعتوں سے مستعفی ہوکر پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کااعلان کیا۔ ۔اس موقع پر جلسے سے صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن میاں جمشید الدین کاکاخیل، ضلع ناظم نوشہرہ لیاقت خان خٹک، ایم این اے ڈاکٹر عمرا ن خٹک، ریٹائرڈ ایس پی اختر علی خان، احد خٹک ، تاج بادشاہ اور ذوالفقار خان نے خطاب کیا۔ پرویز خان خٹک نے کہا کہ تحریک انصاف اب بھی اس ملک کی سب سے بڑی مقبول سیاسی جماعت ہے۔مخالفین کچھ بھی کرلیں۔تحریک انصاف کے خلاف کوئی سازش کامیاب نہیں ہوگی۔ رسالپور کینٹ بورڈ کاضمنی الیکشن تحریک انصاف کے ساجد مشوانی دو تہائی اکثریت سے جیت گئے اے این پی کو اپنی حثیت کااندازہ لگ گیا۔ جبکہ پی پی پی اور مسلم لیگ ن کی تو ضمانتیں ضبط ہوگیءں۔ ہمارے مخالف دینی اور سیاسی جماعتیں خود آپس میں ٹوٹ پھوٹ کاشکار ہیں۔ اور عوام بھی سمجھ چکے ہیں کہ اس ملک کو مذید ان کرپٹ سیاست دانوں کی کوئی ضرورت نہیں۔جنھوں نے ہمیشہ غریبوں سے ووٹ حاصل کرکے غریبوں کے سروں پر اقتدار کی کرسی تک پہنچ کربعد میں غریب عوام کا پوچھا تک نہیں۔غریب عوام پر سرمایہ کاری تو دور کی بات انہوں نے ہمیشہ غریبوں سے نفرت کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ سیاسی لیٹرے ثابت کریں کہ انتخابات کے بعد انہوں نے واپس اپنے حلقوں میں مڑ کر نہیں دیکھا۔ اب یہ پھر جنازوں اور عوامی تقریبات میں نظر انے لگے ہیں۔ چونکہ 2018 میں انتخابات ہوں گے۔ پرویز خٹک نے کہا کہ میں خود میرا بھائی ضلع ناظم لیاقت خان خٹک ڈاکٹر عمران خٹک احد خٹک اسحق خٹک ہم سب کے سب حلقے میں سالا سال موجود رہتے ہیں۔ اور ہمارا رابطہ گزشتہ 35 سال سے اپنے عوام سے قائم و دائم ہے پرویز خٹک نے کہا کہ وقتی سیاست پر یقین نہیں رکھتے ہماری سیاست کا مقصدعوام کی خدمت ہے۔ انھوں نے کہا کہ مجھے ضلع نوشہرہ کے عوام پر فخر ہے جنھوں نے ہمیشہ ہم پر اعتماد کیا۔ اور آج اگر میں وزیر اعلیٰ کی سیٹ تک پہنچا ہوں تویہ نوشہرہ کے عوام کی بدولت ممکن ہوا۔ عوام نے ہمیں بھاری مینڈیٹ دیا۔ اور ہم نے 2013 کے انتخابات میں ضلع بھر کی قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستیں جیتیں۔ بلدیاتی انتخابات میں تینوں تحصیل اور ضلعی حکومت قائم کی اور بلدیاتی انتخابات میں 95 فیصد نسشتیں پی ٹی آئی نے جیتی۔ میں ضلع نوشہرہ کے عوام کا یہ احسان کبھی بھی نہیں بھول سکتا۔انھوں نے کہا کہ محکمہ پولیس کی اپ گریڈیشن کااعلان کردیا ہے۔ خیبرپختونخوا پولیس کی تنخواہیں اور مراعات پنجاب پولیس کے برابر ہوجائیں گی۔انھوں نے کہا کہ ہماری حکومت تعلیم صحت، عوام کے بنیادی مسائل کے حل کے لیے پہلے دن سے کوشاں ہیں۔افسوس سے کہنا پڑتا کہ سابقہ دور حکومت نے اداروں کو تباہ کیا۔ تعلیم صحت اورعوام کے بنیادی مسائل کے حل پر کوئی توجہ نہیں دی گئی۔ پاکستان میں ستر برسوں سے دو کمروں کاپرائمری سکول جس میں دو اساتذہ چھ کلاسز کو پڑھاتے تھے ، غریب کے بچوں کے ساتھ ظلم تھا۔ ہسپتال ڈاکٹرز کے بغیر چلائے جارہے تھے۔ہم نے سکولوں میں اساتذہ کی کمی پورے کرنے کے لیے 35 ہزار اساتذہ بھرتی کیے اور مذید بھرتی جاری ہے۔ اٹھائیس ہزارسکولوں میں کمروں چار دیوواری واش رومز کی کمی پوری کررہے ہیں۔ اور اس پر اربوں روپے خرچ کیے۔ 2018 کے انتخابات سے قبل کوئی سکول بغیر استاد اور بغیر فرنیچر کے بغیر نہیں رہے گا۔صوبہ بھر کے تمام ہسپتالوں میں ڈاکٹرز، نرسوں اور پیر امیڈیکس کی کمی پوری کردی ہے ڈاکٹرز بھرتی کیے اور اسی طرح ہزاروں نرسز اور پیر امیڈیکس بھرتی ہوچکے ہیں ہسپتالوں کو بااختیار بورڈ کے حوالے کردیا گیا۔ تاکہ سہولیات غریب کو ان کی دہلیز پر مل سکیں ۔ انھوں نے کہا کہ اٹھارہ لاکھ خاندانوں کوصحت انصاف کارڈ فراہم کردئیے ہیں آئندہ سال مذید اٹھارہ لاکھ خاندانوں کاصحت کار ڈ فراہم کریں گے کیونکہ غریب عوام کے پا س بیماریوں کے علاج کے لیے کوئی رقم نہیں۔ اسی وجہ سے ہم نے صحت کار ڈ جاری کیا۔ کیونکہ یہ ریاست کی زمہ داری ہے ۔ انھوں نے کہا کہ سی پیک سے خیبرپختونخوامیں ترقی کا نیا دور شروع ہوگا۔ چین کے ساتھ ہونے والے معاہدوں سے سب سے زیادہ سرمایہ کاری خیبرپختونخوا میں ہوگی۔انھوں نے کہا کہ چینی سرمایہ کاروں نے خیبرپختونخوا کا رخ کردیا ہے۔ کئی صنعتی اورتجارتی منصوبوں سمیت اہم پراجیکٹس پر معاہدے ہورہے ہیں۔ اور اس ضمن میں اپریل کے پہلے ہفتے میں چین کادوسرا دورہ کررہاہوں پرویز خٹک نے کہا کہ چین خیبرپختونخو ا میں اپنے کارخانے شفٹ کررہا ہے جس سے لاکھوں افراد کو روزگارملے گا۔ اور صوبہ ایک بڑا تجارتی مرکز بن جائے گا۔ پرویز خٹک نے کہا کہ گلگت بلتستان دیر چترال روڈ ایک نیا بزنس کاریڈور بننے جارہا ہے۔ جس سے افغانستان ،وسطی ایشیاء ممالک، روس اور چین کے مابین زمینی فاصلے بہت کم ہو جائیں گے۔ اوریہ خطہ مستقبل میں بہت بڑی اہمیت حاصل کررہا ہے انھوں نے کہا کہ ہم آنے والی نسلوں کے لیے سوچ رہے ہیں انھوں نے نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ فنی علوم حاصل کریں اور چینی زبان سیکھیں۔

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں