139

ترقیاتی بجٹ کے 30 فیصد کے حساب سے43ار ب روپے مقامی حکومتوں کو منتقل کئے جارہے ہیں ۔وزیراعلیٰ پرویزخٹک

پشاور(نمائندہ ڈیلی چترال)وزیر اعلی خیبر پختونخواہ پرویز خٹک نے کہا ہے کہ صوبے کو سیلاب کی تباہ کاریوں سے بچانے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جارہے ہیں دریائے کابل سمیت دیگر دریاؤں کے سیلاب سے علاقوں کو محفوظ بنانے کیلئے حفاظتی پشتوں پر کام شروع ہے پہلے سال دس ارب روپے مختص کئے گئے ہیں آئندہ دو سالوں میں صوبے کے بیشتر علاقوں کو سیلاب سے محفوظ بنادینگے پرویز خٹک نے کہا کہ میں خودنمائی اور فوٹو سیشن پر پر یقین نہیں رکھتا بلکہ ہم عملی اقدامات کرتے ہیں وفاقی حکومت ملک کو سیلاب سے محفوظ بنانے کیلئے منڈا ڈیم، باشا ڈیم، چترال ڈیم سمیت چھوٹے ڈیموں پر فوری طور پر کام شروع کرے جس سے نہ صرف بدلتے ہوئے موسمی حالات میں سیلابوں کا خطر ہ ٹل جائے گا جبکہ توانائی اور پانی کے مسائل بھی حل ہونگے وفاقی حکومت چین کی سرمایہ کاری میں خیبر پختونخوا کا پورا حصہ دے اور میگا پراجیکٹ پر رقم خرچ کرے ورنہ قوم اسے معاف نہیں کریگی وہ جمعہ کے روز بارہ بانڈہ یونین کونسل، ضلع نوشہرہ میں شمولیتی جلسہ سے خطاب کر رہے تھے یونین کونسل بارہ بانڈہ کے نو منتخب ضلعی کونسلر قاری ظہوراللہ، تحصیل کونسلر محمد اسماعیل ،ویلج کونسل بارہ بانڈہ کے چیئرمین فقیر حسین، ویلج کونسل کوتر پان کے چیئرمین حاجی ملک یعقوب اور ویلج کونسل شیرینزکوٹے عبدلاکبر سمیت 39کونسلروں نے اپنی پارٹیوں سے مستعفی ہو کر تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی وزیر اعلیٰ نے ممبران کو پی ٹی آئی کی ٹوپیاں پہنائیں اور نئے شامل ہونے والوں کا خیر مقدم کیا اس موقع پر صوبائی وزیر ایکسائیز اینڈ ٹیکسیشن میاں جمشیدالدین کا کاکا خیل،رکن ضلع کونسل لیاقت خان خٹک بھی موجودتھے جبکہ جلسے سے کینٹ بورڈ رسالپور کے وائس پریذیڈنٹ اور پی ٹی ائی کے صوبائی رہنماء عابد کلیم مشوانی، ڈسٹرکٹ کونسلر قاری ظہور اللہ، تحصیل کونسلر محمد اسماعیل، حاجی لطیف اور جلیل خٹک نے بھی خطاب کیا پرویز خٹک نے کہا کہ عوام نے تحریک انصا ف کو حقیقی تبدیلی لانے کیلئے وووٹ دیا اور تحریک انصا ف کی صوبائی حکومت اپنے منشور پر عمل پیرا ہے اس سے قبل جتنی بھی سیاسی حکومتیں قائم ہوئیں انہوں نے اپنے منشور کو بالائے طاق رکھا پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان واحد لیڈر ہیں جو اس ملک میں غربت ،افلاس، طبقانی نظام تعلیم، ظلم ، غریبوں کا ااستحصال، تھانہ اور پٹوار کلچر ختم کر نا چاہتے ہیں اور انصاف کا بول بالا کرنے ،غریبوں کی عزت نفس بحال کرنے اورصحت ،تعلیم ،پینے کے صاف پانی سمیت عوام کے بنیادی مسائل کا حل چاہتے ہیں اور پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت ان ہی اہداف کو پورا کرنے کے عملی اقدامات کر رہی ہے پرویز خٹک نے کہا کہ صوبے میں تھانہ اور پٹوا ر کلچر تبدیل کر دیاگیا ہے پولیس سمیت تمام محکموں کو سیاست سے پاک کر دیا ہے اور تمام فیصلے اورتقرریاں و تبادلے میرٹ کی بنیاد پر کر رہے ہیں وزیر اعلیٰ نے عوام سے پوچھا کہ وہ بتائیں کہ تھانہ اور پٹوار خانے میں تبدیلی آئی ہے تو عوام نے ہاں میں جواب دے کر وزیر اعلی کی خوب تائید کی پرویز خٹک نے عوام پر زور دیا کہ انہیں جہاں پر بھی رشوت نظر آئے تووہ مجھے آگاہ کریں انہوں نے کہا کہ نہ میں خود چور ہوں اور نہ چوری کرنے دونگا میری صوبائی حکومت میں کرپشن اور کمیشن ،چوری چکاری کے تمام راستے بند کر دئیے گئے ہیں جو بھی غلط کام کریگا اس کا احتساب ہو گا اور صوبے میں ایسا احتساب کا نظام قائم کیا گیاہے کہ جس کے سامنے میں بھی جوابدہ ہو ں پی ٹی آئی نے قوم سے جو وعدے کئے ہیں ان میں سے بیشتر پورے ہوگئے ہیں پرویز خٹک نے کہا کہ ہماری صوبائی حکومت نے سیلاب سے بچاؤ کیلئے کروڑوں درخت اُگانے کی مہم شروع کر دی ہے جبکہ دوسری طرف دریائے کابل سمیت تمام دریاؤں
کے کناروں پر حفاظتی پشتے تعمیر کرنے کاکام شروع کردیا ہے جو دوسالوں میں مکمل ہو گا درخت اُگانے سے ماحول بہتر ہو گااور وہاں زمین کا کٹاؤ رکے گا اسی طرح چھوٹے ڈیموں اور بیراجوں کی تعمیر پر بھی کام شروع ہو رہا ہے اس ضمن میں بیرونی سرمایہ کاری بھی ہوگی پرویز خٹک نے کہا ہم نے تمام اختیارات مقامی حکومتوں کو منتقل کردیئے ہیں اور ترقیاتی بجٹ کے 30 فیصد کے حساب سے43ار ب روپے مقامی حکومتوں کو منتقل کئے جارہے ہیں ہر یونین کونسل کو سالانہ ساڑھے چار کروڑ روپے ملیں گے جس میں سب سے اہم رول ویلج کونسل کا ہے اور ان کی اولین ترجیح دیہاتوں اور قصبوں کی صفائی ہوگی تحصیل کونسلر اور ضلع کونسلر کا اپنا اپنا کردار ہوگا اگر مقامی حکومتیں بہتر کارکردگی دکھائیں گی تو ان کو مزید اختیارات اور وسائل دینگے اگرانہوں نے خراب کارکردگی دکھائی تو ان سے اختیارات واپس لے لئے جائیں گے انہوں نے کہا کہ حالیہ بلدیاتی انتخابات میں اپوزیشن کی سیاسی جماعتیں پی ٹی آئی کیخلاف متحد ہوئیں مگر اس کے باوجود پی ٹی آئی نے بہترین نتائج دکھائے اور ووٹ بینک میں اضافہ سامنے آیا یہ سب پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت پر عوام کے بھرپور اعتماد سے ممکن ہوا وزیر اعلیٰ نے سپاسنامہ میں تمام مطالبات منظور کرتے ہوئے بارہ بانڈہ ہائی سکو ل کو ہائیر سکنڈری کا درجہ دینے اور یونین کونسل میں پندرہ ٹرانسفارمر ،پندرہ کلومیٹر سڑک اور بنیادی مرکز صحت اورآبپاشی اور آبنوشی کے منصوبوں کا اعلان بھی کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں