46

نیند پوری نہ ہونے سے ہڈیاں بھی کمزور پڑسکتی ہیں، امریکی ماہرین

نیو یارک: امریکی ماہرین نے دریافت کیا ہے کہ نیند پوری نہ ہونے سے جہاں دوسری کئی بیماریاں لاحق ہوسکتی ہیں وہاں اس سے ہڈیاں بھی کمزور پڑسکتی ہیں۔ یہ مطالعہ بیک وقت کئی امریکی اسپتالوں میں آنے والے ایسے مریضوں پر کیا گیا جنہیں نیند پوری نہ ہونے کی شکایت تھی اور اسی وجہ سے وہ صحت کے کئی مسائل کا شکار بھی تھے۔ ایسے افراد میں جہاں مختلف جسمانی، ذہنی اور دماغی امراض نمایاں طور پر دیکھے گئے وہیں یہ انکشاف بھی ہوا کہ ان کی ہڈیاں ایسے لوگوں کی نسبت کمزور تھیں جو پوری نیند لیتے تھے اور تازہ دم ہوکر جاگتے تھے۔ اس بات کی تصدیق کے لیے ایک اور مطالعے میں 20 سے 65 سال تک کی عمر کے رضاکاروں کو سونے اور جاگنے کے ایک خاص تجربے سے گزارا گیا جس میں انہیں 3 ہفتے تک پوری نیند نہیں لینے دی گئی۔ مطالعے کے اختتام پر معلوم ہوا کہ ان افراد میں ہڈیوں کی نشوونما کرنے اور انہیں مضبوط بنانے میں مددگار پروٹین کی کارکردگی متاثر ہوئی جس سے ان تمام لوگوں میں ہڈیاں نسبتاً کمزور پڑگئیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بڑی عمر میں مسلسل ناکافی نیند کے اثرات زیادہ نقصان دہ ہوتے ہیں جن کے نتائج ’’اوسٹیوپوروسس‘‘ نامی ایک بیماری کی شکل میں بھی ظاہر ہوتے ہیں جس میں ہڈیاں نرم اور بھربھری پڑنے لگتی ہیں جب کہ اس سے خواتین زیادہ متاثر ہوتی ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں