182

چترال سکاوٹس کی قریبی چھاونیوں سے روزانہ کی بنیاد پر ابلے ہوئے انڈے اور پراٹھے بچوں اور بچیوں میں تقسیم

چترال (نمائندہ ڈیلی چترال) پاک آرمی کے سوات ڈویژن کے جنرل افیسر کمانڈنگ میجر جنرل علی عامر اعوان کی ہدایت پر چترال کے دوردراز علاقوں سے تعلق رکھنے والے مختلف سکولوں میں زیر تعلیم تین ہزار کے لگ بھگ طلباء طالبات کو متوازن غذا کی فراہمی کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے جوکہ ایک سال تک جاری رہے گی جس کے دوران پاک فوج اور چترال سکاوٹس کی قریبی چھاونیوں سے روزانہ کی بنیاد پر ابلے ہوئے انڈے اور پراٹھے بچوں اور بچیوں میں تقسیم کئے جائیں گے۔ جن علاقوں میں یہ غذائی اشیاء تقسیم کئے جارہے ہیں،ان میں یارخون لشٹ، دوبارگر، پاؤر، ارندو، دامیل، لنگور بٹ، بریر، رمبور، بمبوریت، جنجریت کوہ، ارسون، ارسون گول، میر دین ، گرم چشمہ ، بروغل، شاہ سلیم، کشمانجا، بگوشٹ اور دوسرے پسماندہ علاقے شامل ہیں۔ منگل کے روز گورنمنٹ پرائمری سکول گہیریت میں منعقدہ ایک تقریب میں پاک آرمی کے لیفٹیننٹ کرنل عدنان شفیق نے بچوں اور بچیوں میں انڈے اور پراٹھے تقسیم کرکے مہم کا آغاز کردیا ۔ اس موقع پر سکول کے ہیڈ ٹیچر شفیق الرحمن نے کہاکہ 1969ء میں قائم اس سکول میں صرف تین کلاس روم تھے جبکہ کلاسوں کی تعداد پانچ ہے جس کی کمی کو پورا کرنے کے لئے پاک آرمی کے سوات میں موجودہ جی۔او۔سی نے دو کلاس رومز تعمیر کرکے اس کمی کو پورا کردیا ہے جبکہ اس وقت سکول میں انرولمنٹ 208ہے۔ انہوں نے کہاکہ معیاری غذا کی کمی کو پوراکرنے میں انڈوں اور پراٹھوں کی تقسیم کا سلسلہ شروع کرنے کے بعد بچے اور بچیاں شوق وذوق سے سکول آرہے ہیں اور حاضری کی شرح میں کئی گنا اضافہ ہوگیا ہے۔ اس موقع پر سکول کے طالب علم عبدالرشید اور طالبات مسکان اور نادیہ گل نے پاک آرمی کی طرف سے انڈے اور پراٹھے تقسیم کرنے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہااس عمل سے سکول کے تمام بچے اور بچیاں خوش ہیں۔ سکول میں زیر تعلیم ایک طالب علم کا باپ یورمس جلا ل نے بھی سکول میں کلاس روموں کی تعمیر اور غذائی اشیاء کی تقسیم کی تعریف کی۔

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں