71

چترال ماربل سٹی کے حوالے سے بعض غیر متعلقہ افراد کریڈٹ لینے کی ناکام کوشش کررہے ہیں/فوزیہ بی بی

چترال (نمائندہ )چترال ماربل سٹی کے حوالے سے بعض غیر متعلقہ افراد کریڈٹ لینے کی ناکام کوشش کررہے ہیں/  موجودہ منصوبہ صوبائی حکومت پہلے ہی سے منظور کرچکی ہے اور پندرہ کروڑ روپے زمین کی خریداری کیلئے پہلے مرحلے میں جاری کئے جاچکے ہیں ان خیالات کا اظہار تحریک انصاف چترال کے صدر عبداللطیف اور ممبر صوبائی اسمبلی بی بی فوزیہ نے مشترکہ بیان میں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ 2013ء میں انتخابات کے فوراً بعد جب تحریک انصاف کی صوبائی حکومت بنی تو تحریک انصاف کے کارکنوں نے صوبائی وزیراعلیٰ پرویز خٹک سے ماربل سٹی کیلئے زمین کی خریداری کیلئے فنڈ جاری کرنے کی درخواست کی جس پر وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا نے فوری احکامات جاری کئے اور زمین کی خریداری کا عمل شروع کردیا گیا لیکن چونکہ چترال میں زمینوں کی بندوبست کا پراجیکٹ بھی چل رہا ہے اس لئے قیمتوں کے تعین کے حوالے سے کچھ قانونی پیچیدگیاں آڑے آرہی تھیں لیکن اب یہ پیچیدگیاں بھی ختم ہوچکی ہیں اس سلسلے میں گزشتہ مہینے کی 20 تاریخ کو صوبائی وزیراعلیٰ سے ملاقات میں خصوصی طور پر اس مسئلے کو اٹھایا گیا اور وزیراعلیٰ نے ڈپٹی کمشنر جوکہ اس میٹنگ میں موجود تھے کو ہدایات جاری کردیئے کہ زمین کی خریداری کا مرحلہ جلد از جلد مکمل کیا جائے اس حوالے سے فنڈز ضلعی انتظامیہ کے حوالے کئے جاچکے ہیں اور عنقریب زمین کی خریداری کا مرحلہ مکمل ہوجائیگا لیکن بعض غیر متعلقہ لوگ اس مرحلے میں آکر انگلی کٹاکر شہیدوں میں نام لکھوانے کے مصداق اس پورے منصوبے کا کریڈٹ لینے کی ناکام کوشش کررہے ہیں
جو کسی لحاظ سے بھی پسندیدہ عمل نہیں ۔ ماربل سٹی تحریک انصاف کا منصوبہ تھا ہے اور رہے گا اور یہ چترال کی ترقی میں ایک انقلابی اقدام ثابت ہوگا ۔

Print Friendly, PDF & Email