77

کرم تنگی ڈیم کا تعمیراتی کام بھرپور انداز میں جاری، 83.4 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی

وفاق کے زیر انتظام قبائیلی علاقہ شمالی وزیرستان ایجنسی میں کرم تنگی ڈیم کا تعمیراتی کام بھرپور انداز میں جاری ہے جس سے 83.4 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔ یہ منصوبہ تقریباً30ارب روپے کی لاگت سے پانچ سال میں مکمل کیا جائے گا۔ رواں سال مارچ میں اس منصوبے پر تعمیراتی کام کا باضابطہ افتتاح ہوا تھا۔ اس ڈیم میں پانی کو ذخیرہ کرنے کی گنجائش 1.2ملین ایکڑ فٹ رکھنے کی تجویز ہے جس سے شمالی وزیرستان ایجنسی اور ضلع بنوں میں تین لاکھ 62 ہزار ایکڑ اراضی سیراب کی جاسکے گی۔ کرم تنگی ڈیم دو مرحلوں میں مکمل کیا جائے گا، اس کا پہلا مرحلہ 3 سال کی مدت میں مکمل ہوگا۔ماہرین کے مطابق ڈیم سے علاقے میں نہ صرف سماجی واقتصادی بہتری آئے گی بلکہ سیلاب کی روک تھام میں بھی مدد ملے گی۔واضح رہے کہ کرم تنگی ڈیم کم لاگت کا ماحول دوست منصوبہ ہے جس سے شمالی وزیرستان اور خیبرپختونخوا کاوسیع رقبہ بھی سیراب کیا جاسکے گا۔ واپڈا کے ماہرین کے مطابق ڈیم کے پہلے مرحلے میں 18میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی اور 1600ایکڑ زرعی زمین کے لیے پانی دستیاب ہوگا جبکہ منصوبہ مکمل ہونے کی صورت میں پیدا ہونے والی بجلی کی مقدار 83.4 میگاواٹ ہوگی۔

Print Friendly, PDF & Email