تازہ ترین
Home >> تازہ ترین >> چترال کے باشندے اپنے روایات مہمانوازی کو برقرار رکھتے ہوئے عمران خان اور وزیراعلیٰ کا پرتپاک استقبال کرینگے۔سماجی وسیاسی کارکن عنایت اللہ اسیر
Qashqar Lab

چترال کے باشندے اپنے روایات مہمانوازی کو برقرار رکھتے ہوئے عمران خان اور وزیراعلیٰ کا پرتپاک استقبال کرینگے۔سماجی وسیاسی کارکن عنایت اللہ اسیر

چترال(نامہ نگار) چترال کے باشندے اپنے روایات مہمانوازی کو برقرار رکھتے ہوئے عمران خان اور وزیراعلیٰ کا پرتپاک استقبال کرینگے۔2017کے آخری ایام میں عمران خان اور وزیراعلیٰ خیبر پختونخواہ کا چترال کا دورہ خود پی ٹی آئی کے لئے بھی قوت کا ذریعہ اور چترال کے باشندوں کے لئے بھی نہایت سودمند ہوگی۔ان خیالات کا اظہار سماجی وسیاسی کارکن عنایت اللہ اسیر نے ایک اخباری بیان میں کیا۔اُنہوں نے کہا کہ چترال کے باشندے سیاسی تعلقات سے بالاتر ہوکر حسب روایت اپنے مہمانوں کا پُرتپاک اور شاندار وجاندار استقبال کریں گے۔اس دورے سے پی ٹی آئی کے ورکروں میں جوش وجذبہ بیدار ہوگا اور اس موقع پر اُٹھائے گئے اقدامات 2018کے الیکشن پر لازمی اثرات چھوڑیں گے۔یہ دورہ سردی کے آغاز میں پی ٹی آئی کے نوجوان ورکروں میں گرمی کی لہر دوڑانے کا سبب ہوگا جو کافی مدت سے سیاسی سرگرمی نہ ہونے سے ٹھنڈے پڑگئے تھے۔اُنہوں نے کہا کہ اس اہم موقع پر چترال کے باشندے چند ایک ضروری اقدامات کی توقع رکھتے ہیں۔
(1) چترال کے باشندے ضلع مستوج کے قیام پر پی ٹی آئی گورنمنٹ کے تہہ دل سے مشکور ہیں۔اس ضلع کو اس کے سابقہ جغرافیائی حدود کے اندر ہی بحال کیا جائے۔
(2) نئے منظور شدہ ضلع کو قومی اسمبلی میں سیٹ دی جائے تاکہ اس کی پسماندگی کو دور کیا جاسکے۔
(3) نئے منظور شدہ تحصیل دروش و تحصیل ارندو کو ملاکر صوبائی اسمبلی میں الگ سیٹ دی جائے جو اس علاقے کے لئے ترقی کا ضامن ہوگا۔
(4) چترال میں دوہزار سال قبل از مسح سے بسنے والے کلاش قبائل اپنے تہذیبی اقدار اور رسم رواج کی بناء پر منفرد تاریخی حیثیت کے حامل ہیں لہذا صوبائی اسمبلی میں کلاش اقلیت کو ایک میل اور فیمل کی سیٹ دیجائے۔
(5) چترال میں چترال چمبر آف کامرس کے سرپرستی میں ریجنل کامرس کانفرنس کا انعقا د کرکے چترال سے سینٹرل ایشیاء افغانستان اور چائینا سے جائز تجارت کی راہیں کھولی جاسکیں۔
(6) چترال میں ڈرائی پورٹ کا انتظام کرکے سنٹرل ایشیاء اور افغانستان کی سرحدات تک کے لئے پاکستان سے سامان کی ترسیل کی جائے۔
(7) چترال میں ایک پُرسہولت پولو کمپلیکس کی تعمیر کی جائے تاکہ پولو پلیئر کو سہولت دی جاسکے۔
(8) چترال میں کولڈ اسٹوریج کا قیام وقت کی اہم ضرورت ہے۔
(9) اور چترال کے دور دراز قائم ہائی سکولز کی بہتات کے پیش نظر ہزاروں طلباء وطالبات کی سہولت کے لئے چترال میں انٹرمیڈیٹ بورڈ کا قیام عمل میں لایا جائے۔

error: Content is protected !!