51

 اقتصادی رابطہ کمیٹی نے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی اصولی منظوری دیدی

اسلام آباد: اقتصادی رابطہ کمیٹی نے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی اصولی منظوری دیدی ہے۔وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کی صدارت میں ای سی سی کا اجلاس ہوا جس میں بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی اصولی منظوری دی گئی تاہم ای سی سی کی جانب سے منظور کردہ بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی سمری حتمی منظوری کیلئے وفاقی کابینہ کے سامنے پیش کی جائے گی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ بجلی کی قیمتوں کے نئے سلیب متعارف کروائے جائیں گے، امیر طبقے کے لیے بجلی زیادہ مہنگی ہوگی جب کہ برآمدی شعبہ کے لیے بجلی کی قیمتوں میں سہولت دی گئی ہے، بجلی کی قیمتوں کے حوالے سے ٹیرف ریشنلائزیشن پلان کی منظوری دی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق بجلی کی قیمت میں اوسطاً ایک روپے 18 پیسے فی یونٹ اضافہ کیا گیا ہے جب کہ 300 یونٹ تک بجلی استعمال کرنے والے صارفین کے لیے بجلی کی قیمت میں اضافہ نہیں کیا گیا، 300 سے 700 یونٹ بجلی استعمال کرنے والے صارفین کے لیے 10 فیصد جب کہ 700 یونٹ سے زیادہ استعمال کرنے والے صارفین کے لیے بجلی کی قیمت میں 15 فیصد اضافہ کیا گیا۔ زرعی شعبے کے لیے بجلی کے نرخ میں 5 روپے فی یونٹ کمی کر دی گئی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے بجلی صارفین کو سبسڈی دینے کی بھی منظوری دی، حکومت بجلی صارفین کو 179 ارب روپے کی سبسڈی دے گی۔ دوسری جانب وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کا کہنا ہے کہ بجلی کی قیمت میں اضافہ توقع سے کم کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ اس سے قبل نیپرا ہیڈ کوارٹرز میں بجلی کی قیمت میں اضافے سے متعلق سماعت ہوئی جس میں نیپرا کی جانب سے بجلی کی فی یونٹ قیمت میں 20 پیسے اضافے کی منظوری دے دی گئی، بجلی کی قیمت میں اضافہ ستمبر کے مہینے کی فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا جب کہ 20 پیسے اضافے سے صارفین پر ڈھائی ارب روپے کا اضافی  بوجھ پڑے گا۔

Print Friendly, PDF & Email