مرحبا صد مرحبا۔۔۔۔ذاہدعلی نزاری

مرحبا ای عشق یار، مرحبا صد مرحبا
ای جمال نو بہار، مرحبا صد مرحبا
تیری آمد کی خوشی، میرے دل کی تازگی
ای متاع انتظار، مرحبا صد مرحبا
تیرے ہی دیدار سے دل کو وہ فرحت ملی
جس سیہ یدل پرخمار، مرحبا صد مرحبا
تشنہ لب عاشق تیرا کرتا ہے تجھ کوسلام
قلب مضطر کے قرار، مرحبا صد مرحبا
ماہ و اختر کی ضیا، نور ہے خرشید کا
تجھ سے ہے سب مستعار، مرحبا صد مرحبا
دیکھ کر تیری جبین، ڈوب کر اس نور میں
میں ہوں حیرت کا شکار، مرحبا صد مرحبا
تو ہی گل اندام ہے، تجھ سے ہی ہے میرا نام
ای نسیم مشکبار، مرحبا صد مرحبا
ہے غم ہجران بھی، وصل کی امید بھی
حسن سیرت، طبع یار، مرحبا صد مرحبا
تو ہی ہے مفتاح عشق، منزل شہراہ عشق
قابل صد افتخار، مرحبا صد مرحبا
ہے نزاری بیقرار، تیغ چشمت کا شکار
تو ہی ہے لیکن حصار، مرحبا صد مرحبا

Print Friendly, PDF & Email