150

چترال کے ہسپتالوں میں عرصہ درازسے 55سے 60ڈاکٹروں کی آسامیاں خالی پڑی ہیں/ایم پی اے مولاناہدایت الرحمن

ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چترال کے میں ڈاکٹر وں کی شدیدکمی سے متعلق ایم پی اے مولانا ہدایت الرحمن کی نشاندی پر صوبائی حکومت نے ایک ہفتے کے اندرچترال کے DHQ ہسپتال میں ڈاکٹرز کی خالی آسامیاں پر کرنے کی یقین دہانی کرادی ہے جمعرات کے روزصوبائی اسمبلی کے جاری اجلاس میں چترال سے رکن اسمبلی مولانا ہدایت الرحمن نے توجہ دلاؤ نوٹس میں ایوان کو بتایا کہ چترال کے ہسپتالوں میں عرصہ درازسے 55سے 60ڈاکٹروں کی آسامیاں خالی پڑی ہیں جس کی وجہ سے چترال کے باشندوں کو اپنے علاج کیلئے دوردرازکے اضلاع سے مریضوں کو لانا پڑتاہے۔ انہوں نے وزیر صحت سے اس معاملے میں دلچسپی لینے کا مطالبہ کیا تاہم وزیر صحت کی ایوان سے غیرحاضری کی وجہ سے وزیر قانون سلطان محمدخان نے ایوان کو بتایا کہ چترال کے ہسپتالوں میں ماہرین امراض قلب اورآنکھوں کے ڈاکٹرز موجود نہیں ہیں اس مسئلے کو وزیر صحت کے ساتھ اٹھالیا ہے اور آئندہ ہفتے یہ مسئلہ حل کردیاجائیگاوزیر قانون نے بتایا کہ ڈاکٹروں کا کمی کا مسئلہ حل نہ ہو نے پر یہ معاملہ کمیٹی کو سپرد کر دیاجائیگا۔چترال کے عوامی و سماجی حلقوں نے مولانا ہدایت الرحمن کی طرف سے چترال کے اس اہم مسئلے پر ؂ توجہ دلاؤ نوٹس کو سراہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email