شندور فیسٹول کو جنگلی حیات , آبی حیات اور مقامی لوگوں و پالتو جانوروں کیلئے موت کا سامان نہ بنایا جائے/رحمت علی جعفر

چترال ( محکم الدین ) چترال اینوائرنمنٹ اینڈ ہیریٹیج پروٹیکشن سوسائٹی ( چیپس) کے چیف ایگزیکٹیو رحمت علی جعفر نے کہا ہے . کہ شندور فیسٹول کو جنگلی حیات , آبی حیات اور مقامی لوگوں و پالتو جانوروں کیلئے موت کا سامان نہ بنایا جائے . میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا . کہ شندور ایک بین الاقوامی شہرت یافتہ سیاحتی مقام ہے . لیکن فیسٹول میں شرکت کرنے والے ہزاروں سیاح سالانہ جس طرح آلودگی پھیلاتےہیں . اس سے جنگلی حیات , آبی حیات اور شندور کے مضافاتی علاقوں کے لائیو سٹاک بچے کچے زہریلے خوراک کھا کر ہلاک ہو جاتے ہیں . جبکہ یہاں کچرے کے ڈھیر اور فالتو اشیا و گندگی سے پھیلنے والی تعفن اور ماحولیاتی آلودگی سے علاقے کو ناقابل تلافی ماحولیاتی نقصان پہنچ رہا ہے . اس لئے شندور فیسٹول کے انتظامات اور اخراجات میں اس کی صفائی کیلئے فنڈ مختص کیا جائے . تاکہ شندور میں جمع ہونے والے کچروں اور گندگی کو سائنسی بنیادوں پر ٹھکانے لگایا جاسکے . انہوں نے کہا . کہ شندور فیسٹول کے موقع پر بزنس کمیونٹی کی طرف سے جو گندگی پھیلائی جاتی ہے . اس کی صفائی کا خود انہیں پابند بنایا جائے . انہوں نے منسٹری آف ٹورزم اور منسٹری آف کلائمیٹ چینج سے پر زور مطالبہ کیا . کہ شندورکو ماحولیاتی آلودگی سے بچانے کیلئے سنجیدہ اقدامات کریں . رحمت علی جعفر نے شندور میں حکومت کی طرف سے آتشبازی پر پابندی کو خوش آیند قرار دیا . اور کہا . آتشبازی سے جنگلی حیات خوف و ہراس کا شکار ہوتے تھے . اور قدرتی ماحول میں چترال کے کلچر کے خلاف کوئی بھی تفریح مناسب نہیں

Print Friendly, PDF & Email