نعت مقبول۔۔۔۔اعظم سیتاپوری

تصور سے کہیں بڑھ کر یہاں ہر شے ملی مجھ کو
سکون ِ قلب ہو حاصل، فضا ایسی لگی مجھ کو
یہ چاہے دل کہ چوموں میں در و دیوار روضے کی
ہو جیسے گل عنادل کو نبی کی ہے گلی مجھ کو
تمنا تھی کہ دیکھوں میں مدینے کا حسیں منظر
میں ہوں ممنون رب کہ یہ سعادت مل گئی مجھ کو
درونِ روضۃ الجنت عطائے رب سے بیٹھا ہوں
ملی خوشبو یہاں جیسے ہو خوشبو خلد کی مجھ کو
کھڑا عاصی ہوا جب پیش کرنے کو سلام ان پر
نظر اٹھتی نہ تھی اتنی ہوئی شرمندگی مجھ کو
زہے قسمت دیارِ مصطفی بھی دیکھ آیا میں
أقامت تھی مگر اتنی نہیں سیری ہوئی مجھ کو
حسیں دنیا سہی لیکن مدینہ ہے دگر اعظم
نہیں مل پائے گی ایسی کہیں دل بستگی مجھ کو

Print Friendly, PDF & Email