29

پولیو کے حوالے سے بنوں ڈویژن حساس ترین قرار، 22جولائی کوخصوصی پولیو مہم چلانے کا فیصلہ

پشاور /خیبر پختونخوا کے بنوں ڈویژن میں پولیو کے 25 کیسز سامنے آنے کے بعد 22جولائی سے خصوصی انسداد پولیو مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے۔ مہم کے دوران 4 لاکھ 58ہزار466 بچوں کو پولیو سے بچائو کے قطرے پلائے جائیں گے۔اس بات کا فیصلہ ایمرجنسی آپریشن سنٹر(ای او سی) خیبر پختو نخوا میںاعلیٰ سطحی اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت ای او سی کوآرڈینیٹر کیپٹن(ر) کامران احمد آفریدی نے کی۔اجلاس میں ڈائریکٹر ای پی آئی ڈاکٹر اکرم شا ہ اور دیگر معاون اداروں کے اعلیٰ حکام اور نمائندوںنے شرکت کی۔ اجلاس میں حال ہی میں سامنے آنے والے پولیو کیسز کا تفصیلی جائزہ لیا گیا جس کی بڑی وجہ والدین کا اپنے بچوں کو پولیو سے بچائو کے قطرے نہ پلانا قرار دی گئی۔اجلاس میں بتایا گیا کہ پولیو وائرس کی منتقلی کو روکنے کے لئے بنوں، لکی مروت اور شمالی وزیرستان میں انسداد پولیو مہم چلائی جائے گی جس کے لئے تمام انتظامات مکمل کر لے گئے ہیں، مہم کو موثر بنانے کیلئے تربیت یافتہ ہیلتھ ورکرز پر مشتمل 2 ہزار147ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جن میں1ہزار932موبائل ٹیمیں،110فکسڈ ٹیمیں، 93ٹرانزٹ اور12رومنگ ٹیمیں شامل ہیں، ان ٹیموں کی موثر نگرانی کیلئے 505 ایریا انچارجز کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے، انسدادپولیو مہم کو کامیاب بنانے کیلئے پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی خدمات بھی حاصل کی جائیں گی اور اس ضمن میں ڈپٹی کمشنر اور ڈی ایچ او کی سرابراہی میں خصوصی عوامی آگہی مہم چلائی گئی ہے۔اجلاس میں والدین سے اپیل کی گئی کہ وہ اپنے 5 سال تک کے بچوں کو ہر انسداد پولیو مہم کے دوران پولیو سے بچائو کے قطرے ضرور پلوائیں تاکہ وہ اس موذی مرض سے ہمیشہ کے لئے محفوظ رہ سکیں۔

Print Friendly, PDF & Email