52

ُاُرسون روڈکے ٹینڈرمیں من مانی طور تبدیلی کرکے خاص افرادکونوازنے اور ٹھیکہ داروں کو محروم رکھنے کی کوشش کی گئی ہے/صدرنوراحمدخان

چترال(نمائندہ ڈیلی چترال )آل گورنمنٹ کنٹریکٹرزایسوسی ایشن چترال کے صدرنوراحمدخان نے ایس آرایس پی کےPATRIPپروگرام کے تحت اُرسون رو ڈکاٹھیکہ الاٹ کرنے کے مراحل پر تحفظات کااظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ غیرضروری شرائط کوختم کرکے مقامی ٹھیکہ داروں کومقابلے میں حصہ لینے کاقابل بنایاجائے ۔بدھ کے روزچترال میںمیڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ایس آر ایس پی کو انجینئرنگ کونسل اورکیپرا کے ضوابط کاپابندہوناچاہیے لیکن 6کلومیٹراُرسون روڈکے ٹینڈرمیں من مانی طور تبدیلی کرکے خاص افرادکونوازنے اورمقامی ٹھیکہ داروں کواس سے محروم رکھنے کی کوشش کی گئی ہے جس کافوری طورپرنوٹس لیاجائے ۔انہوںنے کہا کہ چترال افغانستان کے سرحدمیں واقع ہونے کی وجہ سے اس علاقے میں ٹھیکہ داربھی ہشت گردی کے خلاف جنگ میں متاثرہوئے ہیںجس کی وجہ سے PATRIPکے تحت اس کام میں مقامی ٹھیکہ داروں کوفوقیت دی جائے ۔انہوںنے PATRIPکے تحت چترال کے سرحدی علاقے ارندواوراُرسون میں سڑکوں کی تعمیرپرایس آرایس پی کاشکریہ اداکیا۔انہوں نے مزیدکہاکہ ماضی میں بھی ایس آرایس پی نے تعمیراتی کاموں کے ٹینڈروں میں بے ضابطگیوں کاارتکاب کیاجس سے مقامی ٹھیکہ دارمتاثرہوگئے ۔نور احمد خان نے کہاکہ چترال میں بھی C-2، C-3اور C-4 کیٹگری کے ٹھیکہ داروں کی دستیابی کے باجود ان کوٹینڈر کے عمل سے محروم رکھنا نہایت ذیادتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email