42

 گلگت بلتستان  پروفیسر اینڈ لیکچرار ایسوسی ایشن کے مطالبات: ارباب اختیارت کے نام

گلگت بلتستان پروفیسر اینڈ لیکچرار ایسوسی ایشن کے صدر اور کابینہ نے گلگت بلتستان کی تمام کالجز(میل و فی میل) کے فیکلٹی ممبران کیساتھ طویل مشاورت  کے بعد یہ طے کیا کہ حکومت گلگت بلتستان  اور متعلقہ تمام ادارے ، جی بی کالجز کے تمام فیکلٹی ممبران کے جائز اور بنیادی مطالبات جو طویل عرصے سے تعطل کا شکار ہیں فوری طور پر منظور کرے جو حسب ذیل ہیں۔
١۔ ٹائم سکیل پرومووشن
٢۔ سروس اسٹرکچر یعنی  5Tier Farmula
٣۔  ٹیچنگ الاونس (تمام اساتذہ کا تدریسی الاونس  کم از کم  20ہزار کیا جائے)
٤۔ تکمیل شدہ سکیم (کالجز)  کی خالی آسامیوں کی کریشن
٥۔کالجز کی عمارتیں قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی سے خالی کرانا
GBPLA جی بی کالجز کے تمام فیکلٹی ممبران کی نمائندہ تنظیم ہے کا پروز مطالبہ ہے کہ ان بنیادی مطالبات کو فوری حل کیا جاوے بصورت دیگر تمام کالجز میں فیکلٹی ممبران سخت ترین احتجاج کرے گی۔مرحلہ وار احتجاج کا شیڈول یہ ہے۔
١۔ ٹوکن اسٹرائیک (کالی پٹیاں): بروز پیر 18نومبر2019 سے  بروز اتور 24 نومبر
٢۔ کلاسوں کا مکمل بائیکاٹ: بروز پیر 25نومبر 2019سے ۔۔۔۔مطالبات کی منظوری تک
١۔ پروفیسر ارشاد احمد شاہ (صدر) ۔۔۔۔۔۔۔۔ ٢۔ پروفیسر طاہر ربانی( سینئرنائب صدر)۔۔۔۔۔۔۔۔
٣. پروفیسر فضل عباس(سینئر نائب صدرگلگت)۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
٤۔ پروفیسر محمد رفیع(جنرل سیکریٹری)۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
٥۔پروفیسر لال بیگم(سینئر نائب صدر خواتین ونگ)۔۔۔۔۔۔۔۔ ٦۔پروفیسر گل نسرین(نائب صدر خواتین ونگ)۔۔۔۔۔۔۔۔
٧۔پروفیسر انتخاب عالم(فنانس سیکریٹری)۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ٨۔پروفیسر محمد عالم( پرووینشل کوارڈینیٹر)۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
٩۔پروفیسر محفوظ اللہ (ڈویژنل نائب صدر دیامر استور ریجن)۔۔۔۔ ١٠۔ پروفیسر عامر بیگ (ڈویژنل نائب صدر غذر)۔۔۔۔۔۔۔۔
١١۔ امیرجان حقانی(سیکرٹری پریس و انفارمیشن)۔۔۔۔۔۔۔۔ ١٢۔ ڈی پی ای شیر دل(نمائندہ ڈی پی ایز)۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
١٣۔ رحمت علی(ڈپٹی جنرل سیکریٹری)۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Print Friendly, PDF & Email