164

کرونا وائریس سے بچاو کے سلسلے تعاون پر انتظامیہ اپر چترال اے کے ار ایس پی کا شکر گزار ہے۔ڈپٹی کمشنر اپر چترال

بونی/ اے۔کے۔آر۔ایس۔پی اپر چترال کینڈین حکومت کے پراجیکٹ کی  AQCESSمالی تعاون سے گرلز ڈگری کالج بونی میں بارہ کمروں پر مشتل ائیسولیشن رومز ضروریات اور درکار سہولیات سے اراستہ کرکے آج انتظامیہ اپر چترال کو حوالہ کردی۔کمروں کے ساتھ واش روم کی سہولت،مریض کے لیے سنیٹائزر ضرورت کے مختلف سامان اور میڈیسن رکھے گئے ہیں۔ اور سٹاف کے رہنے کے لیے اسٹاف روم بھی بنائے گئے ہیں۔ائیسولیشن سنٹر ضلعی انتظامیہ کو حوالہ کرتے وقت ڈپٹی کمشنر اپر چترال شاہ سعود، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اپر چترال ذوالفقار احمد تنولی،ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر موڑکھو/ تورکھو مکرم خان،ایریا پروگرام منیجر اے۔کے۔آر۔ایس۔پی پیر سجاد حسین اور سٹاف، پریزیڈنٹ آغا خان ریجنیل کونسل امیتاز عالم اور ڈاکٹر سردار نوازبھی موجود تھے۔ موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر اپر چترال شاہ سعود نے کہا۔میں انتظامیہ کی طرف سے اے۔کے۔ڈی۔این کے جملہ ادارے بشمولِ اے۔کے۔آر۔ایس۔پی کا شکر گزار ہوں۔ کہ کرونا وائریس سے بچاو اور روک تھام کے سلسلے آغا خان ڈیویلپمنٹ نیٹ ورک انتظامیہ کے ساتھ کھڑی ہے۔اس سلسلے آج اپر چترال کے لیے بارہ کمروں / بیڈز پرمشتمل ائیسولیشن سنٹر مطلوب سہولت کے ساتھ انتظامیہ کو حوالہ کرنا احسن اقدام ہے۔ڈپٹی کمشنر نے مزید کہا کہ اے۔کے۔آر۔ایس۔پی اس کے علاوہ بھی مختلف امور میں بھر پور تعاون کر رہا ہے اور کرونا وائریس سے بچاو کے اگاہی مہیم کے سلسلے ادارے کا کردار نمایان ہے۔ اس لیے انتظامیہ اے۔کے۔ڈی۔این کے جملہ ادارے اور ریجنیل کونسل کا شکر گزار ہے۔ اس موقع پر اپ نے کہا کہ انتظامیہ اپنی محدود وسائل کے اندر رہتے ہوئے ہر ممکن سہولیات فراہم کرنے کی کوشش میں مصروف ہے۔ اس سے پہلے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال بونی ائیسولیشن وارڈ قائم کی گئی ہے جس کے ایک وارڈ میں چھ بستروں کی گنجائش موجود تھی۔ تا ہم اے۔ کے۔ آر۔ ایس۔ پی کی طرف سے فراہم کردہ ائیسولیشن سنٹر میں مریضوں کو علحیدہ علحیدہ رکھنے میں اسانی پیدا ہوگی۔۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر اپر چترال دعا کی کہ اللہ کرے کہ یہاں ایسے مریض انے کی نوبت نہ ائیے۔

Print Friendly, PDF & Email