179

کاغ لشٹ تورکھو کا اٹوٹ انگ ہے اور دریا کے بہاؤ اور جغرافیہ کے لحاظ سے مکمل طور پر تورکھو ہی کا قدرتی حصہ ہے/سابق ڈی پی او محمد سید خان لال

چترال (نمائندہ ڈیلی چترال) جمعیت علمائے اسلام کے سینئر رہنما، سابق ڈی پی او اور ممبر تحصیل کونسل محمد سید خان لال نے کہا ہے کہ کاغ لشٹ تورکھو کا اٹوٹ انگ ہے اور دریا کے بہاؤ اور جغرافیہ کے لحاظ سے مکمل طور پر تورکھو ہی کا قدرتی حصہ ہے اور اس بنا پر حکومت کو چاہئے کہ اس زمین پر کسی بھی مقصد کے لئے تعمیر کرتے ہوئے اہالیان تورکھو کو اپنے اعتماد میں لے لے جوکہ اس کا اصل امین اور وارث ہیں۔ ایک اخباری بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ ز مانہ قدیم سے کا غ لشٹ تورکھو کا حصہ رہا ہے اور وہ اس سے استفادہ کرتے رہے ہیں اور اب بھی اس کی ملکیت ان ہی کے پاس ہونا چاہئے اور یہ بات تاریخی حقائق سے بھی ثابت کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کا غ لشٹ کو مختلف مقاصد کے لئے استعمال میں لاتے ہوئے اہالیان تورکھو کو نظر انداز کیا جارہا ہے جوکہ ان کے ساتھ سراسر ذیادتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اہالیان تورکھو اپنے ایک ایک انچ زمین کا دفا ع کرنا خوب جانتے ہیں اور تورکھو کے ایک ذمہ دار نمائندے کی حیثیت سے وہ حکومت کو خبردار کرنا چاہتے ہیں کہ زمینی، جغرافیائی اور تاریخی حقائق کو مدنظر رکھ کر قدم اٹھایاجائے ورنہ صورت حال کے خراب ہونے کی ذمہ داری حکومت پر عائدہوگی۔

Print Friendly, PDF & Email