86

تحریک حقوق اپر چترال کے سینئرنائب صدر رحمت سلام لال کا استعفیٰ جذباتی فیصلہ ہے۔جنرل سیکرٹری حقوق عبد اللہ جان

اپر چترال/تحریک تحفظِ حقوق اپر چترال،اپر چترال کا واحد غیر سیاسی تنظیم ہے جو عرصہ دراز سے اپر چترال میں عوامی حقوق کے لیے جد وجہد میں مصروف ہے اور ہر مسئلے پر آواز اٹھاتے رہتے ہیں۔رحمت سلام لال تحریک کے سینئرنائب صدر اور دیرنہ کارکن ہے جو چند روز قبل اپنے ایک بیان کے ذریعے تحریک سے علیحدگی کااعلان کر چکے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ تحریک اس وقت غیر سیاسی اور تعصبات سے بلا تر نہیں رہا۔ تحریکِ تحفظِ حقوق اپر چترال کے جنرل سیکرٹری عبد اللہ جان نے اپنے رد عمل دیتے ہوئے اس بات پر افسوس کا اظہار کیاہے کہ تحریک کے بنیادی رکن اور سینئر نائب صدر جو کہ تحریک کے لیے قابلِ احترام ہے،اپنے جذباتی فیصلے کے ذریعے تحریک سے علیحدگی کا اعلان کیاجو کہ باعث تعجب ہے۔رحمت سلام لال اگرکوئی تحفظات رکھتے تھے تو تحریک کا ایک منظم اور فعال کابینہ موجود ہے اس کے نوٹس میں لاتے۔لیکن نوٹس میں لائے بے غیر تحریک پر مختلف الزامات عائد کرنا ان کے شایان شان قطعی نہیں۔لال محترم کو چاہیے تھا اگر ایسا کوئی کام ہوا ہو جو تحریک کے دستور کے مطابق نہ ہو تو اسے کابینہ کی نوٹس میں لاکر اس پر بحث کراتے اور اس سے غلط فہمیاں دور ہوتی۔اُنہوں نے کہا کہ بحیثیت جنرل سیکرٹری میں یقین سے کہتا ہوں کہ لال کا فیصلہ کوئی غلط فہمی کا ہی نتیجہ ہے۔تحریکِ تحفظِ حقوق اپر چترال علاقے میں تمام تعصبات سے بالاتر ہوکر عوامی حقوق کے لیے آواز اٹھانے کے لیے وجود میں آئی ہے جو اپنے موقف پر عمل پیرا ہے۔رحمت سلام لال کے اگر کوئی تحفظات ہیں تو انہیں دور کرنے کے لیے بہت جلد کابینہ کا میٹنگ بلایا جائیگا اور لال کو اپنے موقف، مدعا پیش کرنے کا بھر پور موقع دیا جائیگا۔ جنرل سیکرٹری عبداللہ جان کا مزید کہنا تھا کہ تحریک کسی فرد واحد کا نام نہیں یہ ایک منظم ادارہ ہے اور اس کا ایک نظام ہے جس کے تحت یہ تحریک قائم ہے اورا سے کسی سازش کا شکار نہیں ہونے دیا جائیگااور نہ تحریک کوکسی فردِ واحد کے تابع ہونے دینگے۔

Print Friendly, PDF & Email