30

چترال میں ایک الگ یونیورسٹی کاقیام چترال کی ضرورت ہے اورچترالی نوجوانوں کاحق بھی ہے۔سعیدہ زہرہ وادوفاطمی

چترال (ڈیلی چترال نیوز)عبدالولی خا ن یونیورسٹی کیمپس چترال میں چترالی نوجوانوں کے تعلیمی مسائل اورچترال یونیورسٹی کے قیام کے موضوع پرایک روز ہ سمینار منعقدہوئی جس کی مہمان خصوصی ممبرقومی اسمبلی اورٹروورتھ فاونڈیشن پاکستان کی چیرپرسن سعیدہ زہرہ وادوفاطمی تھی۔انہوں نے طلباء وطالبات سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ چترال میں ایک الگ یونیورسٹی کاقیام 4چترال کی ضرورت بھی ہے اورچترالی نوجوانوں کاحق بھی ہے۔اس سلسلے میں وہ اپنی ذاتی دلچسپی سے وزیراعظم پاکستان محمدنوازشریف،گورنرخیبرپختونخوا اقبال ظفرجھگڑا،مریم نوازشریف اورہائیرایجوکیشن کے وزیرمملکت بلیغ الزمان سے خصوصی درخواست کرکے چترال میں یونیورسٹی کے قیام کویقینی بنائیں گے۔انہوں نے اپنے ادارے کی طر ف سے چترال میں صحت،تعلیم اورووکیشنل سینٹرزکے قیام کے لئے کام کرناچاہتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ میں چترال کے پسماندگی کومدنظررکھتے ہوئے خواتین اورنوجوانوں کے مسائل کے حل کے لئے ترجیجی بنیادوں پرکام کیاجائے گا۔سمینار سے خطاب کرتے ہوئے عبدالولی خان یونیورسٹی کیمپس چترال کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹرجمال شاہ نے کہاکہ وائس چانسلرڈاکٹراحسان علی چترال میں ایک الگ یونیورسٹی کے قیام میں خصوصی دلچسپی رکھتے ہیں اورموجودہ کیمپس اورملحقہ زمینات اس مقصد کے لئے استعمال کئے جاسکتے ہیں۔سمینار سے مسلم لیگ (ن) کے صدرسعید احمدخان،نیازاے نیازی ایڈوکیٹ،کیمپس کواڈینٹرضیاء 3الرحمن،پروفیسرنیلہ اورپروفیسراسیفہ نے خطاب کرتے ہوئے چترال میں ایک الگ یونیورسٹی کے قیام کووقت کااہم تقاضا قراردیاجس سے چترال کے ہزاروں طلباء وطالبات کواعلیٰ تعلیم کی سہولیات میسر آئیں گے۔

222

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں