تازہ ترین
Home >> خواتین کا صفحہ

خواتین کا صفحہ

عاصمہ جہانگیر کے نام۔۔۔۔۔ہما حیات سید

کبھی نعرے لگاتے ہیں کہیں توہین کرتے ہیں عدل و انصاف کی خاطر نہ جانے کتنے مرتے ہیں حوّا کی بیٹیاں تو سر اُٹھاکر جی نہیں سکتیں اُنھیں انصاف دینا ہے بہت ہی کم یہ کہتے ہیں انہی اشخاص میں سے نام تھا اک عاصمہ کا بھی جنہیں ہم بیٹیوں کی ماں ، عدل کا نام دیتے ہیں میری آواز ...

Read More »

مقبول بیانیہ (پروفیسررفعت مظہر)

28 جولائی 2017ء کو سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بنچ نے پاناما کیسز کا فیصلہ سناتے ہوئے میاں نوازشریف کو نااہل قرار دے دیا۔ میاں صاحب الیکشن کمیشن کے نوٹیفیکیشن سے بھی پہلے وزارتِ عظمیٰ سے مستعفی ہو گئے لیکن اُنہوں نے پانچ رکنی بنچ کے اِس فیصلے کو قبول نہیں کیاکیونکہ وہ سمجھتے تھے کہ یہ فیصلہ سیاسی، جانبدارانہ ...

Read More »

ایک اور وِکٹ اُڑ گئی (پروفیسررفعت مظہر)

حالات خواہ کچھ بھی ہوں میاں نوازشریف کی رَگِ ظرافت ہمیشہ پھڑکتی رہتی ہے۔ اُن کی باتوں میں طنز کی چُبھن بھی نمایاں لیکن وہ کبھی غیرپارلیمانی زبان استعمال نہیں کرتے۔ جب پانچ رکنی بنچ نے اُنہیں نااہل کیا تو میاں صاحب کا اِس نااہلی پر تبصرہ یہ تھا کہ اگر کرپشن کرو تو مجرم اور اگر نہ کرو تو ...

Read More »

عوامی شعور پُختہ ہو چکا (پروفیسررفعت مظہر)

پیپلزپارٹی کے دَورِ حکومت میں جب سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری دَھڑادَھڑ اَزخود نوٹس لے رہے تھے تو نوازلیگ خوشی سے بغلیں بجا رہی تھی۔ اب میاں ثاقب نثار کے اَز خود نوٹسوں کی بھرمار اور پیپلزپارٹی خوشی سے نہال۔ ایک بات بہرحال طے کہ آمریت کسی کو بھی پسند نہیں سوائے اُن ضمیر فروشوں کے جو اقتدار کے ...

Read More »

بلوچ سردار کی بڑھکیں (پروفیسررفعت مظہر)

جوں جوں عام انتخابات قریب آ رہے ہیں، سیاسی درجہ حرارت اپنی رفعتوں کی طرف گامزن ہے۔پاکستان کی سیاسی تاریخ میں ایسا پہلی بار نہیں ہوا بلکہ جب بھی انتخابات کا موسم آتا ہے ،لہجوں میں بتدریج تلخی گھلتی چلی جاتی ہے۔ اب کی باراِن تلخیوں میں یہ نامعقول اضافہ ہو چکا کہ قوم کی رہبری و رہنمائی کے دعویداروں ...

Read More »

یہ کیسا کھیل ہے؟؟؟ (پروفیسررفعت مظہر)

یکم فروری کو آواری ہوٹل لاہور میں عظیم مزاح نگار، کالم نگار، شاعر اور ڈرامہ نگار محترم بھائی عطاء الحق قاسمی کی 75 ویں سالگرہ کی تقریب میں ہم بھی مدعو تھے۔ ہم عموماََ ایسی تقاریب میں شرکت سے گریز ہی کرتے ہیں لیکن یہ تو ہماری اپنی تقریب تھی ، اِس میں بھلا شرکت کیسے نہ کرتے۔ بھائی عطاء ...

Read More »

توہین کا دائرہ کار (پروفیسررفعت مظہر)

ہم نے تو یہ سنا تھا کہ ججز خود نہیں بولتے، اُن کے فیصلے بولتے ہیں لیکن اب تو ماشاء اللہ ججز بھی بولتے اور خوب بولتے ہیں۔ ’’با بارحمت‘‘ عصائے عدل اُٹھائے لوگوں کو سیدھا کرنے کے لیے میدانِ عمل میں ہیں۔ ہر روز کوئی نہ کوئی اَزخود نوٹس لیا جا رہا ہے جس کی بنا پر ادارے بھی ...

Read More »

روز اَفزوں انتخابی بخار (پروفیسررفعت مظہر)

نوازلیگ کا 5 سالہ ہنگامہ خیز دَورِ حکومت اپنے اختتام کی جانب رواں دواں۔ ہنگامہ خیز اِس لیے کہ بیچارے ’’شریفین‘‘ کو کسی نے’’ ٹِک‘‘ کر حکومت کرنے ہی نہیں دی۔ 2013ء کے انتخابات سے لے کر اب تک کوئی نہ کوئی اُڑچن سامنے آتی ہی رہی۔ انتخابات کے فوراََ بعد تو عمران خاں نے کہہ دیا کہ وہ ترقیاتی ...

Read More »

موبائل ۔ ۔ ۔ جو بے وقار کرے ۔۔۔نغمہ حبیب

ہر معاشرہ اپنی ایک پہچان رکھتا ہے اور اس کی کچھ روایات و اقدار ہوتی ہیں۔ مسلمان ممالک میں اِن روایات و اقدار کی بنیاد اسلامی اصول و ضوابط ہوتے ہیں اور اِن کا منبع قران و سنت یا ان سے اخذ شدہ اُصول جو دراصل انسان کی بھلائی اور معاشرتی فلاح و بہبودکے ضامن ہوتے ہیں لیکن آج کے ...

Read More »

مولانا طاہرالقادری پھر پاکستانی یاترا پر (پروفیسرمظہر)

کینیڈین مجمع باز اپنے غیرملکی آقاؤں کے حکم پرایک دفعہ پھر پاکستان یاترا پر ہیں۔ اب کی بار یوں محسوس ہوتا تھا کہ جیسے سانحہ ماڈل ٹاؤن کا بم ’’سلطنتِ شریفیہ‘‘ کو تہس نہس کر دے گا کیونکہ چالیس اپوزیشن جماعتیں اپنی اپنی ڈفلیاں اُٹھائے مولانا کے ہمراہ تھیں۔ بزرجمہر 17 جنوری 2018ء کی احتجاجی ریلی پر نظریں جمائے بیٹھے ...

Read More »