تازہ ترین
بنیادی صفحہ >> خواتین کا صفحہ (صفحہ 10)

خواتین کا صفحہ

حوا کی گود سے جنمی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تحریر : ہما حیات ،چترال

مزید پڑھیں »

میری ملالہ ۔۔۔۔۔تقدیرہ خان رضاخیل

قندہار سے چالیس میل کے فاصلے پر کوہ ماوند کے مغرب میں واقع ماوند کا قلعہ غزنی، کابل اور ہرات کی سمت جانے والے راستوں پر ایک ایسا مقام تھا جسے افغانستان کی فتح کی چابی کہا جاتا تھا۔ اس قلعے اور ارد گرد کے علاقوں کی اہمیت قدیم دور سے تسلیم شدہ تھی جس پر قبضے کے بغیر کسی ...

مزید پڑھیں »

انصاف ہوتا ہوا نظر آنا چاہیے ۔۔۔۔ (پروفیسر رفعت مظہر)

وزیرِاعظم شاہدخاقان عباسی نے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار سے اُن کے چیمبر میں ملاقات کی۔ سپریم کورٹ کے اعلامیے کے مطابق یہ ملاقات خوشگوار ماحول میں ہوئی جس میں مختلف امور پر مشاورت کی گئی۔ اِس ملاقات کے بعد تجزیوں اور تبصروں کا ’’مینابازار‘‘ لگ گیا اور جتنے مُنہ ،اُتنی باتیں۔ پیپلزپارٹی کے سیّد خورشید شاہ نے کہا کہ ...

مزید پڑھیں »

ذرا سوچئے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تحریر : ہما حیات چترال

ماں کا پلّو چھوڑ کر خود کے سر پر پلو سنبھالنے تک کے سفر میں بہت کچھ بدل گیا۔ خود کو بچی کہتے کہتے کب اتنے سارے بچوں کی خالہ پھوپھی بن گئی پتہ ہی نہیں چلا۔ سر پر بڑا سا دوپٹہ لے کر ہاتھوں میں بہت ساری کتابیں لئے استانی بن کر بچپن ،اپنے پسندیدہ کھیل سے نکل کر ...

مزید پڑھیں »

جوڈیشل مارشل لاء (پروفیسررفعت مظہر)

جب سے شیخ رشید نااہلی کیس میں سپریم کورٹ کے محترم جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے ریمارکس سامنے آئے ہیں ،شیخ صاحب کی بوکھلاہٹیں بھی عروج پر ہیں اور وہ متواتر ’’بونگیاں‘‘ ماررہے ہیں۔ دراصل جسٹس صاحب کے ریمارکس تھے ہی اتنے سخت کہ شیخ صاحب کو اپنی سیاسی دُکانداری بندہوتی نظر آئی۔ جسٹس صاحب نے شیخ رشید کے وکیل ...

مزید پڑھیں »

کپتان کا دعویٰ (پروفیسررفعت مظہر)

2013ء کے عام انتخابات سے پہلے کپتان نے دو تہائی اکثریت لینے کے بلندبانگ دعوے کیے لیکن جب نتائج سامنے آئے تو اُن کے وزیرِاعظم بننے کے سارے خواب چکناچور ہوگئے۔ تحریکِ انصاف، نوازلیگ کا مقابلہ تو خیر کیا کرتی، اُسے تو پیپلزپارٹی نے بھی پیچھے چھوڑ دیا اور پارلیمنٹ میں اپنا قائدِحزبِ اختلاف بھی منتخب کروا لیا۔ ایک غلطی ...

مزید پڑھیں »

پرائی جنگ کو اپنا بنایالیکن۔۔۔۔۔۔۔۔نغمہ حبیب

1985 جب افغانستان میں جنگ زوروں پر تھی اور امریکہ اس جنگ کو لڑنے کے لیے مکمل طور پر پاکستان کا محتاج تھا اُسے افغان مجاہدین بنانے کے لیے بھی آئی ایس آئی کی مدد درکار تھی اور ان کے سخت ترین مزاجوں اور پہاڑوں سے آشنا ئی بھی پاکستانی مدد کے بغیر ممکن نہ تھی لیکن اُس کا شاہانہ ...

مزید پڑھیں »

مبارک ہو ،مبارک ہو، مبارک ہو (پروفیسررفعت مظہر)

مبارک ہو!سازش جیت گئی اور جمہوریت ہار گئی۔ مبارک ہو! بالآخر امپائر کی انگلی کھڑی ہوگئی۔ مبارک ہو! اینٹ سے اینٹ بجا دینے کے نعرے لگانے والا زور آوروں کے دَر پہ سجدہ ریز ہوگیا۔ سچ کہا میاں نوازشریف نے ’’ بلاول ہاؤس اور بنی گالہ چابی والے کھلونے ہیں۔ کوئٹہ کا کیا شخص تھاجس کے سامنے سب سجدہ ریز ...

مزید پڑھیں »

ضمیرفروشوں کی پانچوں گھی میں ۔۔۔۔ (پروفیسررفعت مظہر)

3 مارچ کو ایوانِ بالا (سینٹ) کے انتخابات ہوئے اور کیا خوب ہوئے کہ ہر طرف ضمیر فروشی کا غلغلہ اب تک پوری شدومد سے جاری ہے۔ ایوانِ بالا کے اراکین کا چناؤ چاروں صوبائی اسمبلیوں کے اراکین کرتے ہیں اور یہ وہی لوگ ہیں جو ملک وقوم کی رہبری کے دعویدار بھی ہیں۔جب ایسے رَہبر ہوں تو پھر رہزنوں ...

مزید پڑھیں »

عاصمہ جہانگیر کے نام۔۔۔۔۔ہما حیات سید

کبھی نعرے لگاتے ہیں کہیں توہین کرتے ہیں عدل و انصاف کی خاطر نہ جانے کتنے مرتے ہیں حوّا کی بیٹیاں تو سر اُٹھاکر جی نہیں سکتیں اُنھیں انصاف دینا ہے بہت ہی کم یہ کہتے ہیں انہی اشخاص میں سے نام تھا اک عاصمہ کا بھی جنہیں ہم بیٹیوں کی ماں ، عدل کا نام دیتے ہیں میری آواز ...

مزید پڑھیں »