سول ڈسپنسری یارخون میں ڈی ایچ او نے دروش سے تعلق رکھنے اعجازسول ڈسپنسری پریب میں ژانگ بازار سے آصف الرحمن اور دیگر علاقوں کے لوگوں کو کلاس فور بھرتی کیا ہے/پی ٹی آئی ورکروں پریس کانفرنس

چترال (نمائندہ ڈیلی چترال)یوسی یارخون اور یوسی لاسپور کے عمائدین صاحب نور خان،یحییٰ خان،سید مختارعلی شاہ ایڈوکیٹ،ابرہیم شاہ محبوب علی شاہ،فدا رحمت،ظفرخان،منظور علی شاہ،مختار علی،عمران علی شاہ لوئر چترال کے نابیگ ایڈوکیٹ، پی ٹی آئی کے ورکرز اور دوسروں نے محکمہ صحت میں یوسی یارخون اور لاسپور کے لوگوں کے ساتھ ناانصافی پر شدید تنقید مزید پڑھیں

عوام کی خدمت ہماری اولین ترجیح ہے چترال پولیس

شدید سردی کے باوجود چترال پولیس اور چترال ٹریفک پولیس برف میں پھنسے ھوے گاڑیوں کو دھکے دے کر نکال رہے ہیں اور راہگیروں کی مدد کر رہے ہیں ۔ڈی پی او چترال وسیم ریاض خان (PSP) کی ہدایت پر پچھلے 3 دنوں سے چترال پولیس شدید سرد موسم کے باوجود عوام کی خدمت میں مزید پڑھیں

سی پیک پر پورے ملاکنڈ ڈویژن میں کام زور و شور سے جاری ہے دیر بالا و پائیں میں صنعتی زون قائم کئے جا رہے ہیں /ایم این ایصاحبزادہ صبغت اللہ

پشار(نمائندہ ڈیلی چترال)رکن قومی اسمبلی صاحبزادہ صبغت اللہ نے کہا ہے کہ سی پیک پر پورے ملاکنڈ ڈویژن میں کام زور و شور سے جاری ہے دیر بالا و پائیں میں صنعتی زون قائم کئے جا رہے ہیں جبکہ وہاں سیاحت کو بھی ہنگامی بنیادوں پر بطور صنعت ترقی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے مزید پڑھیں

دادبیداد…..سیکولرازم کا خوف….. ڈاکٹر عنایت اللہ فیضی

سیکولرازم پاکستان میں خوف کی علامت ہے لیکن پڑوسی ملک بھارت میں اُمید کی کرن ہے۔اور دونوں باتیں مسلمانوں میں مشہور ہیں۔تاریخ کی بھول بھلیوں میں ٹامک ٹوئیاں مارنے یا فلسفے کی موشگافیوں میں اُلجھنے کی کوئی ضرورت نہیں۔بھارت کی34کروڑ مسلمان،اُنکے علماء،خطیب،آئیمہ مساجداورمدارس کے مدار المہام سب ملکرسیکوالرزم کو آزادی کی علامت قراردیتے ہیں جبکہ مزید پڑھیں

آغا خان یونیورسٹی – ایگزامینیشن بورڈ، بلوچستان میں طلبا کی کارکردگی کی جانچ کے نظام کو تقویت دینے میں کوشاں

آغا خان یونیورسٹی – ایگزامینیشن بورڈ(اے کے یو-ای بی)کے تحت ‘کیپیسیٹی ڈیویلپمنٹ آف اسٹوڈنٹ اسیسمنٹ 2019-2020 ‘ (طلباکی کارکردگی کی جانچ کے لیے صلاحیت سازی کے پروگرام)کے کوہورٹ I فیز II کی اختتامی تقریب کوئٹہ میں منعقد کی گئی۔ یہ پروگرام حکومت بلوچستان، یونیسیف(یونائیٹد نیشنز انٹرنیشنل چلڈرنز ایمرجنسی فنڈ) اور یورپی یونین کے اشتراک سے مزید پڑھیں