77

چترال عوام اب صوبے سے باہر کراچی اور اسلام آباد میں واقع معروف ترین ہسپتالوں سے بھی صحت کارڈ کے ذریعے مفت علاج کراسکتے ہیں شفیق الرحمن

چترال (شاہ مراد بیگ سے) پاکستان تحریک انصاف یوتھ ونگ لویر چترال کے صدر حاجی شفیق الرحمن نے صحت سہولت پلس پروگرام کو وزیر اعظم عمران خان کا خیبر پختونخوا کے عوام کے لئے ایک گران قدر تخفہ اورمدینہ کی فلاحی ریاست کی طرف ایک اہم قدم اور سنگ میل قرار دیتے ہوئے ان کے ساتھ ساتھ وزیر اعلیٰ محمود خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ چترال کے عوام اس سے خصوصی طور پر فائدہ اٹھائیں گے جن کے لئے علاج معالجے کی سہولیات بہت ہی محدود تھے۔ پیر کے روز پارٹی کے دیگر رہنماؤں شہباز احمد(صدر انصاف ویلفیر ونگ لویر چترال)، سمیع اللہ(صدر لیبر ونگ لویر چترال)، سردار ایوب چترالی(صدر انصاف اسٹوڈنٹس فیڈریشن)، جمیع اللہ شیرازی(صدر انصاف ویلفیر ونگ اپر چترال)، ضیاء الرحمن دیرینہ کارکن، اسد الرحمن سینئر کارکن اور محمد حسام کی معیت میں چترال پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہ وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ نے چترال کو اس پروگرام کے پہلے فیز میں شامل کرکے اس علاقے کے ساتھ اپنی خصوصی دلچسپی کا ثبوت دیا جس کے لئے چترال کے عوام ان کے شکرگزار اور احسان مند ہیں اور اس پروگرام کی خصوصیت یہ ہے کہ بے نظیر کارڈ کی طرف یہاں پارٹی کی بنیاد پر نہیں بلکہ سوفیصد لوگوں کو فائدہ پہنچایا جارہا ہے جن کے پاس قومی شناختی کارڈ موجود ہوں اور یہی وزیر اعظم عمران خان کاوژن ہے کہ حکومت کے نظر میں سب برابر ہیں۔ انہوں نے کہاکہ چترال کے عوام اب صوبے سے باہر کراچی اور اسلام آباد میں واقع معروف ترین ہسپتالوں سے بھی اس کارڈ کے لئے مفت علاج کراسکتے ہیں اور یہ ملک کی 74سالہ تاریخ میں اپنی مثال آپ ہے۔ پی ٹی آئی کے رہنما نے چترال کے عوام پر زور دیاکہ وہ صحت سہولت پروگرام کے ضلعی دفتر میں اپنی رجسٹریشن کرائیں اور اپنے کم عمر بچوں کی اس پروگرام سے استفاد ے کے لئے وہ نادرا سے ان کی رجسٹریشن کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے کہاکہ ضلع سے باہر ریفر ہونے پر بھی وہ صحت سہولت پروگرام کے دفتر سے متعلقہ کاغذ تیارکرکے لے جائیں جس کے بغیر پشاور اور دیگر شہروں میں یہ مفت نہیں دی جاتی ہے اور یہ بات حقیقت ہے کہ دفتری ضوابط کو پورا کرنا عوام کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ضلعے کے اندر مختلف ہسپتالوں میں بھی یہ سہولت موجود ہ ہے کہ چترال شہر کے اندر بھی ڈی ایچ کیو ہسپتال کے علاوہ متعدد پرائیویٹ ہسپتالوں میں بھی یہ سہولت موجود ہے جبکہ اس ماہ کی 15تاریخ کو اس پرگرام کے تحت نامزد میڈیکل اسٹوروں میں اضافے کے لئے ٹینڈر طلب کئے گئے ہیں تاکہ عوام کو ادویات کے حصول میں مزید آسانی ہوسکے۔ انہوں نے کہاکہ 2016ء میں بھی صحت کارڈ کے اجراء کے وقت چترال کے ضلعے کوفوقیت دی گئی تھی جوکہ پی ٹی آئی کی قیادت کا اس ضلعے پر مہربان ہونے کا واضح ثبوت ہے۔

Print Friendly, PDF & Email