59

چترال بائی پاس روڈ پر ایک موٹر سائیکل کی ٹکر نے خاتون کی جان لے لی

چترال ( محکم الدین ) چترال بائی پاس روڈ پر ایک موٹر سائیکل کی ٹکر نے خاتون کی جان لے لی ۔ ایک بزرگ خاتون شکیلہ زوجہ ادینہ خان ساکن بہتولی ریحانکوٹ کے سامنے سڑک پر جارہی تھی ۔ کہ تیز رفتار موٹرسائکل سوار توفیق خان ولد خالد خان ساکن پرئیت نے اسے ٹکر مارا۔ جس کے نتیجے میں خاتون کئی فٹ دور جاگری ، اور موقع پر ہی دم توڑ گئی ۔ چترال پولیس نے زیر دفعہ 279 – 320تیزرفتاری کے تحت مقدمہ درج کرکے ملزم کو گرفتار کیا ہے ۔ درین اثنا بزرگ خاتون کی ہلاکت کے بعد مقامی دکانداروں اور لوگوں نے زبردست احتجاج کیا ۔ اور بائی پاس روڈ دو گھنٹوں تک بلاک کئے رکھا ۔ مظاہرین کا کہنا تھا ۔ کہ گذشتہ چند مہینوں کے دوران اسی بائی پاس روڈ پر تیز رفتاری کے باعث کئی واقعات ہوئے ۔ لیکن نہ تو بائی پاس روڈ پر تیز رفتاری کو کنٹرول کرنے کیلئے سپیڈ بریکر بنائے جاتے ہیں ۔ اور نہ
پولیس کی طرف سے تیز رفتا ر ڈرائیوروں اور موٹرسائکل سواروں کے خلاف موثر کاروئی کی جاتی ہے ۔ جس کے نتیجے میں آئے دن انسانی جانیں ضائع ہو رہی ہیں ۔ انہوں نے مطالبہ کیا ۔ کہ فوری طور پر بائی پاس روڈ پر جگہ جگہ سپیڈ بریکر بنائے جائیں ۔ اسٹنٹ کمشنر چترال الطاف احمد اور ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر چترال نے بعد ازان مظاہرین سے بات چیت کرکے بلاک روڈ کھول دی ۔ اور اُنہیں یقین دلایا ۔ کہ اس حوالے سے قانونی طریقہ کار کے تحت سپیڈ بریکر لگائے جائیں گے ۔ تاکہ تیز رفتاری پر قابو پایا جا سکے ۔ اس موقع پر مظاہرین نے بتایا ۔ کہ بائی پاس روڈ کے دونوں طرف پیدل چلنے والوں کے راستوں پر گاڑیاں کھڑی کی جاتی ہیں ، اور یہی حادثات کا اصل سبب ہیں ۔ اس لئے تمام گاڑیوں کیلئے مین سڑک سے باہر پارکنگ کا انتظام کیا جائے ۔ تاکہ راہ چلتے مسافروں کو رکاوٹ کی وجہ سے سڑک کے بیچ میں سے نہ گزرنا پڑے ، اور حادثات کم ہوں ۔ انہوں نے نا تجربہ کار موٹر سائکل سواروں کے خلاف بھی اقدامات کا مطالبہ کیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں