107

چترال کو عام خیموں کی نہیں بلکہ موسم سرما کے لئے خصوصی طورپر تیارکردہ ٹینٹ کی ضرورت ہے جن کی مطلوبہ تعداد کا اندازہ 10ہزار تک لگایا گیا ہے،سیدسردارحسین شاہ

چترال (نمائندہ ڈیلی چترال) چترال سے صوبائی اسمبلی کے رکن سید سردار حسین شاہ نے صوبائی اور مرکزی حکومتوں سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ چترال میں زلزلہ زدگان کو ریلیف پہنچانے اور ان کی بحالی میں غیر ضروری طور پر ایک لمحے کی تاخیر بھی نہ کی جائے کیونکہ موسم سرما کی آمد آمد ہے اور تاخیر کی صورت میں انسانی المیہ رونما ہوسکتا ہے ۔DSC01001 چترال پریس کلب میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ حالیہ زلزلے کے نتیجے میں چترال میں وسیع پیمانے پر تباہی وبربادی ہوئی ہے اور ہزاروں کی تعداد میں گھر مکمل طو رپر منہدم ہوگئے ہیں اور بچنے والے گھر بھی رہائش کے قابل نہیں ہیں اور تعمیر نو کے لئے انتہائی ان کے پاس قلیل وقت باقی ہے۔ انہوں نے چترال کا دورہ کرنے پر وزیر اعظم نواز شریف اور وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ وہ اپنے اعلانات کو عملی جامہ پہنانے میں بھی سنجیدگی کا مظاہر ہ کریں جبکہ سیلاب کے موقع پر ان دونوں حضرات نے جو اعلانات کئے تھے ، وہ ابھی تک روبہ عمل نہیں آئے اور سیلاب زدگا ن اب بھی مدد کے لئے پکار رہے ہیں۔ سردار حسین نے کہاکہ چترال کو عام خیموں کی نہیں بلکہ موسم سرما کے لئے خصوصی طورپر تیارکردہ ٹینٹ کی ضرورت ہے جن کی مطلوبہ تعداد کا اندازہ 10ہزار تک لگایا گیا ہے یا تو انہیں چائنا اسٹرکچر کے گھر بناکر دئیے جائیں جوکہ قلیل مدت میں تعمیر ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے ضلعی انتظامیہ پر زور دیا کہ نقصانات کی اندازہ کا مکمل تخمینہ لگانے کے لئے وقت کا انتظار کئے بغیر ریلیف کی سرگرمیوں کو بلاتاخیر شروع کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں