76

افغان فورسز کی جارحیت کا بھرپور جواب؛ 50سے زائد افغان فوجی مار ے گئے/آئی جی ایف س

کوئٹہ( نیوز ڈیسک)انسپکٹر جنرل فرنٹیئر کور بلوچستان میجر جنرل ندیم احمد نے کہا ہے کہ گذشتہ دنوں چمن میں افغان فورسز کی جارحیت کے جواب میں پاکستانی دفاعی افواج نے بھرپور اور موثر جوابی کاروائی کرتے ہوئے افغان علاقے میں چار سے پانچ پوسٹیں تباہ کیں جس میں افغان فورسز کے50 سے زیادہ لوگ مارے گئے اور100 سے زیادہ زخمی ہوئے۔ انہوںے نے کہا کہ افغان فورسز کو نقصان پہنچانے پر خوشی نہیں،وہ ہمارے مسلمان بھائی ہیں مگر جارحیت برداشت نہیں کی جائے گی۔آئی جی ایف سی میجر جنرل ندیم احمد نے چمن میں افغان فورسز کی اشتعال انگیزی پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان بارڈر فورسز کے اہل کاروں نے مردم شماری میں رکاوٹ ڈالی، کلی لقمان اور کلی جہانگیر میں چار دن سے مردم شمار ی کا عمل جاری تھا، افغان فورسز نے پاکستانی علاقے میں گھس کر گھروں پر قبضے کیے اور پوزیشن سنبھال لی، 5 مئی کی صبح ہم نے افغان فورسز سے اپنے علاقوں کا کنٹرول حاصل کرلیا، جس کے بعد افغان حکومت نے جنگ بندی کی درخواست کی۔ ان کا کہنا تھا کہ شہری آبادی کو نقصان پہنچنے کے ڈر سے بھاری ہتھیار استعمال نہیں کیے ، پاکستانی آبادی پر فائرنگ کرنے والی پوسٹوں کو نشانہ بنایا۔ آئی جی ایف سی نے کہا کہ کسی کو اجازت نہیں دیں گے کہ سرحد پار ہمارے علاقے میں آئے ، پاکستان کے بین الاقوامی بارڈر پر بحث نہیں ہوسکتی اور کوئی خلاف ورزی قبول نہیں۔ میجر جنرل ندیم احمد نے کہا کہ اپنی علاقائی سالمیت کو ہر صورت یقینی بنائیں گے، افغانستان میں بھارت کے لوگ منفی مشورے دیتے ہیں، سرحدی علاقے میں جنگ پاکستان اور افغانستان دونوں کے مفاد میں نہیں۔

Print Friendly, PDF & Email