81

مصیبت کی اس گھڑی میں متاثرین کے ساتھ ناانصافی نہ کی جائے۔نذیر احمد صدر آئی ایس ایف چترال

چترال(نمائندہ ڈیلی چترال)آئی ایس ایف ضلع چترال کے صدر ،پاکستان تحریک انصاف کے ضلع کونسل کے ممبر نذیر احمد نے ایک اخباری بیان میں کہاہے کہ بد قسمتی سے ضلع چترال پچھلے کئی سالوں سے مختلف قدرتی آفات سے دوچار ہے۔ چترال کا تقریباً 80 فیصد آباد ی سیلاب اور حالیہ زلزلے سے متاثر ہو چکا ہے۔جو کہ چترال کا نہیں بلکہ پاکستان کی تاریخ کا شدید ترین زلزلہ تھا۔ جس سے سب سے زیادہ متاثر ضلع چترال ہوا ہے۔ ان قدرتی آفات کے بعد ملک کے وزیر اعظم ،چیئر مین پاکستان تحریک انصاف اور خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ نے چترال کا دورہ کیا۔ اور ان آفت زدہ لوگوں کی امداد کے لئے کئی اعلانات کئے گئے۔لیکن بد قسمتی سے ان اعلانات پر 10 فیصد بھی عملدرامد نہ ہو سکا۔ اسکی سب سے بڑی وجہ چترال میں لیڈر شب کا فقدان اور چترال انتظامیہ کی نا کامی ہے اُنہوں نے کہا کہ ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر چترال  اپنی من مانی کر رہا ہے۔ اُن سے پوچھنے والا کوئی نہیں ہے۔غریب اور آفت ذدہ لوگوں کو امداد کے نام پر ذلیل کیا جا رہا ہے۔ بار بار متاثرین کی لسٹیں بنوارہے ہیں۔پھر چند دونوں بعد لسٹیں تبدیل ہو رہے ہیں۔ ابھی تک سیلاب زدہ گان کو امدا د نہ ملی تو زلزلہ زدگان کو کیا ملے گا۔اس لئے ہم ایک مر تبہ پھر چترال کے نام نہاد لیڈروں ، چترال انتظامیہ اور وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کو آگاہ کر نا چاہتے ہیں کہ متاثرین کے ساتھ اس مشکل کی گھڑی میں نا انصافی نہ کی جا ئے۔ اگر نا انصافی ہوئی ، تو نو جوانا نِ چترال سڑکوں پہ آنے پر مجبور ہو نگے۔

وائی ایس ڈی او کی طرف سے دروش میں امدادی سامان تقسیم
چترال ( نمائندہ ڈیلی چترال) ینگ سٹار ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن (وائی ایس ڈی او) کے زیر انتظام مسلم چیئریٹی پاکستان کے مالی تعاون سے ویلج کونسل شاہنگار دروش کے متاثرین زلزلہ میں امدادی سامان تقسیم کئے گئے ۔ امدادی اشیاء میں خیمے ،کمبل، چٹائی اور اشیاء خوردونوش شامل تھے ۔ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر دروش بشارت احمد اور ونگ کمانڈر 143ونگ چترال سکاؤٹس لفٹننٹ کرنل محمود الحسن نے امدادی سامان متاثرین میں تقسیم کی ۔ اس موقع پر متعلقہ ویلج کونسل کے چیر مین ، کونسلرز کے علاوہ چیف ایگزیکٹیو وائی ایس ڈی او اسفندیار خان بھی موجود تھے ۔ امدادی اشیاء پچاس مستحق خاندانوں میں تقسیم کئے گئے ۔ جن کے مکانات کو زلزلے سے بُری طرح نقصان پہنچا تھا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں