142

پشاور اور چترال کے درمیان چلنے والی گاڑیوں اور فلائنگ کوچ اڈوں کو قانون کے دائرے میں لایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں