153

داد بیداد ..…نیشنل پار ک ..…ڈاکٹر عنا یت اللہ فیضی

مار خور پا کستان کا قومی جا نور ہے، دیودار پا کستان کا قومی درخت ہے چکور پا کستان کا قومی پرندہ ہے چمبیلی پا کستان کا قو می پھول ہے، بر فا نی چیتا دنیا بھر کا نا یاب درندہ ہے یہ تما م انواع چترال گو ل نشینل پار ک خیبر پختونخوا میں یکجا پا یے جا تے ہیں جو خیبر پختونخوا کا 38سال پرا نا نیشنل پار ک ہے وزیر اعظم عمران خا ن کی حکومت میں جن تر جیحات کو اولیت دی جا تی ہے ان میں بد عنوا نی کے خا تمے کے ساتھ جنگلات اور جنگلی حیات کی حفا ظت، ما حول کا تحفظ اور سیاحت کا فروغ سب سے نما یاں نظر آتے ہیں گذشتہ روز خبر آئی کہ ڈبلیو ڈبلیو ایف کے ما ہروں کی ٹیم نے جنوری2022کے پہلے پندرھوا ڑے میں چترال گول نیشنل پارک کے اثا ثہ جا ت کا سروے کر کے اس نیشنل پارک میں 2500مارخوروں کے ریوڑ کی کا میاب گنتی کا اعلا ن کیا، ما ہرین کی ٹیم نے اس بات پر اطمینا ن کا اظہار کیا کہ نیشنل پار ک میں انواع حیات یعنی با یو ڈائیورسٹی کی صورت حال تسلی بخش ہے ما ہرین نے سفا رش کی ہے کہ وزارت مو سمی تغیر منسٹر ی آف کلا ئمیٹ چینچ اور انسپکٹر جنرل فارسٹ کو نیشنل پا رک کے منجمد فنڈ سے پا بندی ہٹا دینی چا ہئیے اور پا رک کے انتظا می امور کی نگرا نی کے لئے مقا می کمیو نیٹی کی با اختیار کمیٹی کو منجمد فنڈ سے سٹا ف کو تنخوا ہیں ادا کر کے پا رک کے انتظا م میں مزید بہتری لا نے کی مکمل آزا دی اور اجا زت دینی چا ہئیے وزیر اعظم کے خصو صی پر گرام میں ملک کے اندر 21نیشنل پارکوں کا قیا م بھی شامل ہے وزیر اعظم چاہتے ہیں کہ انواع حیات کے لحا ظ سے پا کستا ن کو ایک ما ڈل بنا کر دنیا میں شہرت دی جا ئے وزیر اعظم کے اس وژن کی رو سے چترال گول نیشنل پارک کوملک کے پار کوں میں پہلا در جہ حا صل ہو گا مگر اس راہ میں کئی رکا وٹیں حا ئل ہیں چترال گول نیشنل پار ک کا قیا م جنرل ضیا ء الحق کے دور حکومت، 1984ء میں صو با ئی گور نر لفٹنٹ جنرل فضل حق کی کو ششوں سے عمل میں آیا تھا جنرل پر ویز مشرف کے دور حکومت میں صو با ئی گور نر افتخار حسین شاہ کی کو ششوں سے یو نا ئٹڈ نیشنز ڈیو لیپمنٹ پر و گرام (UNDP) اور گلو بل انوائر نمنٹ فیسیلیٹی (GEF) کے ما لی اور تکنیکی تعاون سے بلو چستان میں ہنگول نیشنل پار ک کے ساتھ چترال گول نیشنل پارک کے لئے پرو ٹیکٹیڈ ایریا ز منیجمنٹ پرا جیکٹ (PAMP) منظور کر ا یا گیا، پرا جیکٹ نے پار ک کے شراکت داروں پر مشتمل مقا می کمیو نیٹی کی 11تنظیموں کو ایک کمیٹی کی صورت میں منظم کر کے پار ک کا نظم و نسق کمیو نیٹی کے حوا لے کیا اور نگرا ن سٹاف، وارڈ ن، ہیڈ وا چر، جنرل وا چر وغیرہ کی تنخوا ہوں کے لئے انڈو منٹ فنڈ قائم کیا 2016ء تک یہ فنڈ کمیو نیٹی کو ملتا تھا 2016کے بعد کلا ئمیٹ چینج کی منسٹری نے فنڈ کو منجمد کر دیا، فنڈ منجمد ہو نے کے ساتھ ہی مقا می کمیو نیٹی اور انسپکٹر جنرل فارسٹ (IGF) کے درمیان تنا زعہ پیدا ہوا اس تنا زعہ نے اگر طول پکڑا تو پار ک کے نظم و نسق میں بحران پیدا ہو گا یہ رپورٹ وزیر اعظم کی نو ٹس میں آگئی تو طو فان بر پا ہو گا قو می جا نور ما رخور اور قومی درخت دیو دار کی وجہ سے یہ پا کستان کا قو می پا رک ہے اس پارک میں وزیر اعظم عمران خان کی خصو صی دلچسپی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں