90

ضلعی اکاؤنٹ و آڈٹ دفاتر کی کارکردگی بہتر بنانے کیلئے چھاپوں کا فیصلہ،کرپشن کی بیخ کنی اور زیادہ شفافیت کیلئے حکومت کی مخلصانہ کوششیں جاری رہینگی۔وزیر خزانہ

پشاور(نمائندہ ڈیلی چترال)خیبر پختونخوا میں ضلعی اکاؤنٹ و آڈٹ دفاتر کی کارکردگی بہتر بنانے، اکاؤنٹنٹ جنرل آفس کی مرکزیت ختم کرنے، عوامی شکایات کے ازالے اور چیکوں کے حصول میں حائل مشکلات کے مستقل بنیادوں پر حل کیلئے انفارمیشن ٹیکنالوجی سے استفادے اور آن لائن نظام لانے کے علاوہ ان دفاتر پر محکمہ خزانہ اور اکاؤنٹنٹ جنرل آفس کے حکام کے مشترکہ چھاپوں کا سلسلہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اس ضمن میں وزیرخزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ اور اکاؤنٹنٹ جنرل خیبرپختونخوا شریف اللہ خان وزیر کے مابین سول سیکرٹریٹ پشاور میں اہم ملاقات ہوئی ہے جس میں اکاؤنٹ دفاتر سے متعلق شکایات اور دیگر حل طلب اُمور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا اور ضروری فیصلے کئے گئے اس موقع پر یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ صوبے بھر میں اکاؤنٹ دفاتر کی کارکردگی بہتر بنانے نیز وہاں آنے والے لوگوں بالخصوص حاضر سروس و ریٹائرڈ ملازمین کے مسائل سے اگاہی اور انہیں فوری حل کرنے جبکہ غیرحاضر یا غفلت کے مرتکب اہلکاروں کی موقع پر ہی سرزنش کیلئے وزیر خزانہ اور اکاؤنٹنٹ جنرل بجٹ اعلان کے بعد بذات خود بھی مختلف ضلعی اکاؤنٹ و فنانس آفسز کے مشترکہ دورے کریں گے اسی طرح وہ اپنے دوروں کے دوران ڈویژنل اور ضلعی ہیڈکوارٹر دفاتر کی سطح پر کھلی کچہریوں کا انعقاد بھی کرینگے اکاؤنٹنٹ جنرل نے وزیر خزانہ کے استدلال سے اتفاق کیا کہ اگرچہ اکاؤنٹ دفاتر سے کرپشن اور کمیشن مافیا کا خاطر خواہ حد تک خاتمہ کر دیا گیا ہے تاہم صوبائی حکومت اور نہ ہی اکاؤنٹنٹ جنرل سو فیصد مطمئن ہیں اسلئے خزانہ اور اکاؤنٹ و آڈٹ نظام میں موجود باقی ماندہ خامیاں دور کرنے کیلئے مشترکہ اور مربوط کوششیں کی جائیں گی مظفر سید ایڈوکیٹ نے کہا صوبائی حکومت کیلئے یہ بات ناقابل برداشت ہے کہ ریٹائرڈ سرکاری ملازمین اپنے سروس بک اور ضروری کاغذات بغل میں دابے صوبے کے دور دراز علاقوں سے پشاور آئیں اور پنشن کے مسائل جلد حل نہ ہونے کے سبب پریشانیوں کا شکار ہوں اسی طرح دیگر عوامی حلقوں کو بھی چیکوں کے اجراء میں تکالیف کا سامنا ہو انہوں نے کمپیوٹر و انفارمیشن ٹیکنالوجی کے موجودہ دور میں مالیات و آڈٹ کا مقامی و خودکار طریقہ کار وضع کرنے کی ضرورت پر زور دیا جس کے تحت پنشنرز کو اکاؤنٹ دفاتر کے چکر کاٹے بغیر ہی گھر بیٹھے یا قریبی بینکوں کی سطح پر پنشن کے چیک ملیں یا کم از کم ضلعی اکاؤنٹ دفاتر میں ہی ان کی حاجات پوری ہوں اور انہیں پشاور کا سفر کرنے کی ضرورت ہی نہ پڑے انہوں نے کہا کہ سرکاری مشینری سے کرپشن کے مکمل خاتمے اور زیادہ شفافیت لانے کیلئے حکومت کی مخلصانہ کوششیں جاری رہینگی تاہم اس کا مقصد عوام کے مختلف طبقوں کیلئے تکالیف نہیں بلکہ زیادہ سہولیات اور آسانیوں کی فراہمی ہے انہوں نے محکمہ خزانہ اور اکاؤنٹنٹ جنرل دفاتر میں قائم کمپلینٹ سیل فعال بنانے پر بھی زور دیا شریف اللہ خان وزیر نے مظفر سید ایڈوکیٹ کے فنانس ریفارمز ایجنڈے سے مکمل اتفاق کرتے ہوئے واضح کیا کہ اس سلسلے میں ہم ایک پیج پر ہیں انہوں نے بتایا کہ اکاؤنٹنٹ جنرل کے ای میل ایڈریس ag@agkhyberpakhtunkhwa.gov.pk پرموصولہ عوامی شکایات وہ خود پڑھتے ہیں اسی طرح دیگر تمام ذرائع سے ملنے والی شکایات کا نہ صرف وہ فوری ازالہ یقینی بناتے ہیں بلکہ صارفین اور سائلین کو پیشرفت سے بھی اگاہ کیا جاتا ہے۔
<><><><><><>
محکمہ خزانہ اور ضلعی اکاؤنٹ و آڈٹ دفاتر کی ہفتہ وار چھٹیاں منسوخ
خیبر پختونخوا کے وزیرخزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ نے صوبائی بجٹ کے اعلان اور صوبائی اسمبلی سے منظوری تک سول سیکرٹریٹ میں محکمہ خزانہ کے علاوہ صوبے بھر میں تمام ضلعی اکاؤنٹ و آڈٹ دفاتر کی ہفتہ وار چھٹیاں منسوخ کرنے کا اعلان کیا ہے جس کے بعد ان دفاتر میں ہفتہ اور اتوار کو بھی پورا عملہ ڈیوٹی پر حاضر رہا جبکہ فنڈز و چیکس اجراء کی ڈیڈلائن مکمل ہونے نیز بجٹ تیاری کا اختتام قریب آنے کے سبب افطار تک کام میں مصروف رہا۔

Print Friendly, PDF & Email

اپنا تبصرہ بھیجیں