Breaking News

چترال کے سنیئر صحافی اور صدر پریس کلب چترال محکم الدین کا گھر بھی زلزلے کے نقصانات سے محفوظ نہ رہ سکا

چترال (نمائندہ ڈیلی چترال) زلزلے نے جہاں چترال کے سینکڑوں لوگوں کو بُری طرح نقصان پہنچایا ہے ۔ وہاں چترال کے سنیئر صحافی اور صدر پریس کلب چترال محکم الدین کا گھر بھی زلزلے کے نقصانات سے محفوظ نہ رہ سکا ۔ اور اُن کے مکانات کو زبردست نقصان پہنچا ۔چھ رہائشی کمروں ایک کچن ایک سٹور اور چار واش رومز پر مشتمل گھر زلزلے سے رہنے کے قابل نہیں رہا ہے ۔ اور اب پورا خاندان ایک رفاہی ادارہ فوکس ہیو منٹیرین اسسٹنس اور پی ڈی ایم اے کی طرف سے ملے ہوئے دوامدادی خیموں میں زندگی بسر کر رہا ہے ۔ جبکہ دو سو فٹ چار دیواری بھی مکمل طور پر منہدم ہو چکی ہے ۔ روایتی رہائشی کمروں میں لکڑی کے ستونوں کے استعمال کی وجہ سے اگرچہ مکان بالکل زمین بوس نہیں ہوئے ۔ تاہم دیواروں میں خطرناک دراڑیں پڑ گئی ہیں۔ اُ ن کو از سر نو تعمیر کئے بغیر استعمال کرنا حماقت اور موت کو دعوت دینے کے مترادف ہے ۔ اس لئے انتظامیہ کی طرف سے اُن کو مکمل نقصان کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے ۔زلزلے کے بعدسے تاحال جاری آفٹر شاکس نے زبردست خوف و ہراس پیدا کیا ہے ۔ا س لئے جانی نقصان سے بچنے کیلئے خیموں کو ہی سب سے محفوظ خیال کیا جاتا ہے ۔ خصوصا خواتین اور بچے زلزلے کے خوف سے سردی کے باوجود خیمو ں میں رہائش کو ترجیح دیتے ہیں ۔ گذشتہ رات سے چترال میں بارش اور پہاڑوں پر برفباری سے مشکلات میں مزید اضافہ ہو گیاہے ۔ زلزلہ متاثرین کیلئے حکومت کی طرف سے امداد کے اعلانات کئے گئے ہیں ۔ لیکن زمینی حقائق یہ ہیں کہ پی ڈی ایم اے کی طرف سے متاثرہ صحافی کو ایک خیمے کے سوا کچھ نہیں ملا ۔ اور یہی صورت حال دیگر متاثرین کاہے ۔ وزیر اعظم کی طرف سے پیر 2نومبرکے روز سے زلزلہ متاثرین کو چیک ایشو کرنے کے سلسلے میں واضح حکم دیا گیا تھا ۔لیکن اس کے باوجود زلزلہ زدگان میں فوری طور پر چیک تقسیم کرنے کے آثار دیکھائی نہیں دے رہے ۔اور ہنوز انتظامیہ متاثرین کی کنفرمیشن نہیں کر پائی ہے ۔ جبکہ ماہ جولائی میں سیلاب سے متاثرہ افراد کے چیک اب جاری کئے جارہے ہیں ۔ جو کہ ہمارے اداروں کی تیز رفتاری اور کارکردگی کی روشن مثال ہے ۔

About ایڈیٹر انچیف

سید نذیر حسین شاہ چترال ایک جانے مانے صحافی ہیں اور گذشتہ کئی سالوں سے مختلف اخباروں اور ٹی وی چینلز کے ساتھ بطور رپورٹر منسلک ہیں انہوں نے ابلاع عامہ میں ڈپلوما حاصل کی ہوئی ہے اور ان کے اخبار ڈیلی چترال کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ چترال سے شائع ہونے والا یہ دوسرا اخبار ہے جس کو حکومتی سطح پر سرپرستی حاصل ہے۔

Check Also

سابق ایم پی اے سیدسردارحسین شاہ بریپ کے مقام پرگاڑی کے حادثے میں جان بحق اورزخمی ہونے والے افرادکے لواحقین کے ساتھ ہمددری اورانسانی جانوں کے ضیاع پرانتہائی دکھ اورافسوس کااظہار

چترال(ڈیلی چترال نیوز)سابق ممبرصوبائی اسمبلی اپرچترال سیدسردارحسین شاہ نے پلموٹھینگ بریپ کے مقام پرٹیوٹالینڈکروزرگاڑی   کے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *